آرمی چیف کی امجد صابری کے قاتل سمیت دس دہشتگردوں کی سزائے موت کی توثیق

آرمی چیف کی امجد صابری کے قاتل سمیت دس دہشتگردوں کی سزائے موت کی توثیق

31 views

 آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے معروف قوال امجد صابری کے قاتلوں سمیت 10 دہشت گردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ( آئی ایس پی آر) کے مطابق ان دہشت گردوں میں  محمداسحاق، محمدعارش، محمدرفیق، حبیب الرحمان، محمدفیاض، اسماعیل شاہ، فضل محمد، حضرت علی، محمد عاصم اور حبیب اللہ بھی شامل ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق یہ مجرمان سنگین جرائم بشمول دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث ہیں۔

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ دہشت گرد معصوم شہریوں، پشاور کے ایک ہوٹل، مسلح افواج اور قانون نافذ کرنے والے اداروں پر حملےمیں ملوث ہیں۔

آئی ایس پی آر نے مزید بتایا کہ ان دہشت گردوں میں معروف قوال امجد صابری کے قاتل بھی شامل ہیں جب کہ تمام دہشتگرد 62 افراد کے قتل میں ملوث ہیں جن میں 5 شہری، 11 پولیس اہلکار، 46 فرنٹیئر کانٹیبلری/ مسلح افواج کے اہلکار شامل ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق ان تمام دہشت گردوں پر فوجی عدالتوں پر مقدمہ چلایا گیا جس کے بعد انہیں سزائے موت سنائی گئیں۔

ترجمان پوک فوج کے مطابق ان تمام دہشت گردوں کا تعلق کالعدم تنظیموں سے ہے۔

آئی ایس پی آر کی جانب سے مذکورہ دہشتگردوں کی جو تفصیلات جاری کی گئیں وہ درج ذیل ہیں۔

 محمد اسحاق اور محمد عاصم

دونوں مجرموں کا تعلق کالعدم جماعت سے ہے اور یہ معروف قوال امجد صابری کے قتل سیمت قانون نافذ کرنے والے اداروں اور مسلح افواج پر حملوں میں ملوث ہیں۔

ملزمان کے حملوں میں 17 اہلکار شہید ہوئے ہیں اور ان سے بھاری تعداد میں اسلحہ بھی برآمد کیا گیا۔

یاد رہے کہ امجد صابری کو 22 جون 2016 کو کراچی کے علاقے لیاقت آباد میں گولیاں مار کر قتل کیا گیا تھا۔

 محمد عارش خان

ملزم پشاور میں ہوٹل پر حملے میں ملوث ہے جس کے نتیجے میں 4 افراد شہید ہوگئے تھے جب کہ ملزم کالعدم جماعت سے تعلق رکھتا ہے۔

 محمد رفیق

ملزم محمد رفیق لیفٹیننٹ کرنل محمد یوسف سمیت 16 جوانوں کے قتل اور ایک شہری کے اغواء میں ملوث ہے۔

یاد رہے کہ 22 اکتوبر 2010 کو اپر اورکزئی میں ایف سی کے قافلے کو بارودی سرنگ دھماکے کے ذریعے نشانہ بنایا گیا تھا۔

 حبیب الرحمان

ملزم نے لیفٹیننٹ کرنل انور عباس سمیت 3 اہلکاروں پر حملے میں ملوث ہونے کا اعتراف کیا جب کہ ملزم دہشت گردانہ سرگرمیوں کے لیے فنڈز اکٹھے کرنے میں بھی ملوث رہا ہے۔

 محمد فیاض اور فضل محمد

کالعدم جماعت سے تعلق رکھنے والے دونوں دہشت گرد قانون نافذ کرنے والے اداروں اور سیکورٹی فورسز پر حملوں میں ملوث رہے ہیں۔

مجرمان نے 3 فوجی اہلکاروں اور ایک پولیس کانسٹیبل سمیت 8 افراد کے قتل کا اعتراف کیا ہے۔

 اسماعیل شاہ

کالعدم جماعت سے تعلق رکھنے والا مجرم نے نائب صوبیدار نسیم خان کے قتل سمیت سیکیورٹی فورسز پر حملوں کا اعتراف کیا ہے۔

 حضرت علی

ملزم نے حوالدار وہاب علی سمیت 3 اہلکاروں کے قتل میں ملوث ہونے کا اعتراف کیا ہے اور کالعدم جماعت سے تعلق ہے۔

 حبیب اللہ

کالعدم جماعت سے تعلق رکھنے والا دہشت گرد نے پولیس کانسٹیبل کے قتل اور دیگر کو زخمی کو کرنے کا اعتراف کیا ہے۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *