مارچ کے مہینے میں مہنگائی میں کمی، ادارہ شماریاریات کا دعوی

مارچ کے مہینے میں مہنگائی میں کمی، ادارہ شماریاریات کا دعوی

43 views

ادارہ شماریات کے جاری اعدادوشمار کے مطابق مارچ میں مہنگائی کی شرح 3 اعشاریہ 25 فیصد رہی، جبکہ فروری میں مہنگائی کی شرح 3 اعشاریہ 80 فیصد ریکارڈ کی گئی تھی۔ دوسری جانب جولائی سے مارچ کے دوران مہنگائی کی شرح 3 اعشاریہ 78 فیصد رہی۔

ادارہ شماریات کے مطابق ایک ماہ میں مختلف دالوں کی قیمتیں 2 فیصد تک کم ہوئیں، ٹماٹر 20 فیصد، پیاز 19 فیصد، سبز مرچ 16 فیصد، انڈے 7 فیصد سستے ہوئے۔ اس کے مقابلے میں ایک ماہ میں ہی لہسن، چکن، پیٹرول 4 فیصد سے زائد مہنگے ہوئے۔

11

اس کے علاوہ سپاری 26 فیصد، اخبارات 15 فیصد، نجی سکولوں کی فیس 10 فیصد بڑھی۔ ایک ماہ میں گاڑیوں کی قیمت میں 6 فیصد اضافہ ہوا اور ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں 26 فیصد اضافہ ہوا۔

اعدادوشمار کے مطابق مارچ2018 میں سب سے زیادہ 4.25 فیصد کا اضافہ ہائوسنگ پانی بجلی گیس و ایندھن کے نرخوں ہوا جس کا مارچ کی مہنگائی میں حصہ 1.14 فیصد رہا، اس کے مقابلے میں فوری استعمال کی حامل غذائی اشیا کے نرخ 7.71 فیصد گھٹ جانے کی وجہ سے دیگر خوراک کی قیمتوں میں2.37 فیصد اضافے کے اثرات محدود ہوگئے جس کے باعث فوڈ انفلیشن کے مہنگائی پر اضافے میں 0.36 فیصد کے اثرات رہے، کپڑے اور جوتے 4.84 فیصد اور گھریلوآلات 4.49 فیصد مہنگے ہوئے۔

اے پی پی سی کے مطابق ڈائریکٹر پرائسز پی بی ایس عتیق الرحمن نے پیر کو پریس کانفرنس بتایا کہ کہا کہ مارچ 2018 میں ہول سیل پرائس انڈیکس میں 0.25 فیصد اضافہ اور ایس پی آئی میں 0.60 فیصد کمی ہوئی۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *