پرانی وزارتیں، نئے چہرے

پرانی وزارتیں، نئے چہرے

29 views

بلند وبانگ دعوے کرنے والی حکومت نے ایک سال میں ہی اپنے وزیروں کو تبدیل کردیا گزشتہ روز وزیر اعظم نے کابینہ میں اکھاڑ پچھاڑ کی منظوری دے دی جس کے بعد وفاقی کابینہ ڈویژن نے وزرا کے قلمدان میں تبدیلی کا نوٹی فکیشن جاری کردیا۔

نوٹی فکیشن کے مطابق فواد چوہدری سے وزارت اطلاعات و نشریات کا قلم دان واپس لے کر

انہیں وزیر سائنس و ٹیکنالوجی بنایا دیا گیا ہے اور ان کی جگہ فردوس عاشق اعوان کو معاون خصوصی

برائے اطلاعات مقرر کردیا گیا ہے

حکومت نے اپنی مدت کے پہلے وزیر داخلہ کا تقرر کردیا ہے اور اعجاز شاہ کو وزیر داخلہ کی ذمہ داری سونپ دی ہے

جب کہ وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی کو وزیر سیفران بنادیا گیا ہے۔ وزیر صحت عامر کیانی کو فارغ کردیا گیا ہے۔

اعظم سواتی کو پارلیمانی امور کا وزیر مقرر کیا گیا ہے۔

وفاقی وزیر علی امین گنڈا پور اور وفاقی وزیر پیٹرولیم غلام سرور خان کے قلم دان بھی تبدیل کردیے گئے ہیں۔

میاں محمد سومرو سے ایوی ایشن کا چارج واپس لے کر غلام سرور کو ایوی ایشن کا قلمدان دے دیا گیا ہے

اور ان کے پاس موجود پیٹرولیم کی وزارت واپس لے کر ندیم بابر کو معاون خصوصی برائے پیٹرولیم مقرر کیا گیا ہے۔

اب یہ سوال بھی پوچھا جا رہا ہے کہ کابینہ کے اس رکن کو تبدیل کر دیا جائے جسے وزیر اعظم اپنی ٹیم کا

 اوپنگ بیٹس مین  کہتے رہے ہوں، کہیں یہ اکھاڑ پچھاڑ جماعت کے اندر جاری کھینچا تانی کا نتیجہ تو نہیں

ایسا بھی نہیں ہے کہ فیصلہ صرف اور صرف کارکردگی کی بنیاد پر کیا گیا ہے۔

اب یہ سوال بھی ذہنوں میں اٹھنے لگے ہیں کہ اس قدر قلیل عرصے میں اتنا بڑا فیصلہ معاشی محاذ پر حکومتی پسپائی

اور اپنی ناکامی کا اعتراف نہیں ہے تو پھر کیا ہے ؟ کیا وزیراعظم وزرا کے کام سے غیر مطمئن رہے۔

کارکردگی کی بنیاد پر قلمدانوں کا فیصلہ کرنے والی تبدیلی سرکار کے وزیر تبدیل ہو جائیں ایک بڑا سوال ہے۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *