عوام کی موجیں ختم، موبائل فون کارڈز پر تمام ٹیکس بحال

عوام کی موجیں ختم، موبائل فون کارڈز پر تمام ٹیکس بحال

23 views

سپریم کورٹ آف پاکستان نے موبائل فون کارڈز پر معطل تمام ٹیکس بحال کرتے ہوئے فیصلہ دیا ہے کہ عدالت عالیہ ٹیکس معاملات میں مداخلت نہیں کرے گی۔

 چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کیس کا مختصر فیصلہ پڑھ کر سنایا جس میں کہا گیا ہے کہ عدالت عالیہ ٹیکس معاملات میں مداخلت نہیں کرے گی۔

پبلک ریوینیو اور ٹیکس پر معاملات پر مداخلت کیے بغیر مقدمے کو نمٹاتے ہیں۔

سپریم کورٹ نے از خود نوٹس نمٹاتے ہوئے موبائل فون کارڈز پر تمام ٹیکسز بحال کر دیے اور حکم امتناع ختم کر دیا۔

مورخہ 24 اپریل 2019ء کو سپریم کورٹ آف پاکستان میں موبائل فون کارڈز پر ٹیکس کٹوتی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی

تو اٹارنی جنرل نے ایک بار پھر عدالتی دائرہ اختیار پر اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا کہ ٹیکس کے نفاذ پر ازخود نوٹس کی مثال نہیں ملتی۔

ٹیکسز پر حکم امتناع کے باعث حکومت اپنی آمدن کے بڑے حصے سے محروم ہے، جسے ٹیکس استثنا چاہیے متعلقہ کمشنر سے رجوع کرے۔

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ موبائل فون کارڈ ٹیکس کا نوٹس پانچ ججز کے حکم پر لیا گیا۔

ان لاکھوں لوگوں سے ٹیکس لیا جا رہا تھا جن پر ٹیکس لاگو نہیں ہوتا۔ ٹی وی لائسنس کا ٹیکس بھی ہر شہری سے لیا جاتا ہے۔

ہر ٹی وی دیکھنے پر انکم ٹیکس لاگو نہیں ہوتا لیکن وہ ٹیکس دیتا ہے۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ جو ٹیکس کے اہل نہیں، ان سے پیسہ لینا بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

چیف جسٹس نے کیس کا محفوظ فیصلہ پڑھ کر سنایا اور کہا کہ سپریم کورٹ ٹیکس معاملات میں مداخلت نہیں کریگی

عدالت عدالت یہ از خود نوٹس مقدمہ نمٹاتی ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال 11 جون 2018ء کو سپریم کورٹ نے بڑا فیصلہ کرتے ہوئے موبائل فون کارڈز پر ٹیکس کٹوتی معطل کر دی تھی۔

اس موقع پر چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیے تھے کہ لوگوں سے لوٹ مار کی جا رہی ہے

مقررہ حد سے زیادہ استعمال پر ٹیکس وصول کریں۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *