مجھے تھپڑ کیوں مارا؟ عدنان صدیقی نے ہمایوں سے پوچھ لیا

مجھے تھپڑ کیوں مارا؟ عدنان صدیقی نے ہمایوں سے پوچھ لیا

868 views

 مقبولیت کے نئے ریکارڈ قائم کرنے والے ڈرامہ سیریل ’میرے پاس تم ہو‘ کے شہواریعنی عدنان صدیقی نے دانش(ہمایوں سعید) کی جانب سے مارے جانے والے تھپڑ پر سوشل میڈیا پربڑے دلچسپ انداز میں ردعمل دیا ہے

ہمایوں سعید، عدنان صدیقی اور عائزہ خان کا مقبول ترین ڈرامہ سیریل ’میرے پاس تم ہو‘  اپنےمشہور ڈائیلاگز اوربہترین اداکاری کی وجہ سے ٹاپ ٹرینڈ بن گیا ہے

مداح میرے پاس تم ہو کی ہر آنے والی  نئی قسط کا بےچینی سے انتطار کرتے ہیں

دوسری جانب  ڈرامے کی ہر نئی قسط مقبولیت کے نئے ریکارڈز قائم کررہی ہے۔

ڈرامے کی کہانی اور پاکستان کے سپر اسٹارز  ہمایوں اور عدنان صدیقی کی اداکاری نے شائقین پر سحر سا طاری کر دیا ہے۔

 ڈرامے کی نشر ہونے والی 15 ویں قسط نے ایک نیا  سنسنی خیز موڑ اختیار کر لیا ہے جہاں اب  دانش اپنے بیٹے کی محبت  کی خاطر

شہوار احمد کو زور دار تھپڑ رسید کر دیتے ہیں۔

مداحوں  نے اب تک دانش کا انتہائی پرسکون اور خاموش انداز دیکھاتھا اور اب حالیہ نشر ہونے والی قسط میں دانش کا

 شہوار کو تھپڑ مارنے کا سین سوشل میڈیا پر جنگل کی آگ کی صورت اختیار کر گیا ہے۔

 

مداح  بس ان دونوں کی تصاویر شیئر کرکے خوشی کا اظہار کر رہے ہیں

 

 

تاہم گزشتہ قسط میں مارے جانے والے تھپڑ پر عدنان صدیقی بھی خاموش نہ رہے اور منفرد انداز میں اُن کا رد عمل بھی سامنے آگیا ہے۔

عدنان صدیقی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹا گرام پر ایک ویڈیو شیئر کی

جس میں وہ ہمایوں سے تھپڑ پر چہرے پر مسکراہٹ سجائے شکوہ  کرتے ہوئے کہہ رہے ہیں اس شخص نے میرے ساتھ صحیح نہیں کیا ہے۔

جس پر ہمایوں سعید بدلے میں خود کو تھپڑ مارنے کا کہتے ہیں اور ایک بار پھر عدنان صدیقی کو تھپڑ مار کر چلے جاتے ہیں۔

واضح رہے کہ ڈرامہ سیریل ’میرے پاس تم ہو‘ نے اب تک ریٹنگ میں کئی  شاندار ریکارڈ اپنے نام کر لئے ہیں

جب کہ ڈرامہ کی مقبولیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ 16 ویں قسط کا ٹیزر ٹرینڈنگ میں ٹاپ ٹرینڈ ہے

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *