مشرق وسطیٰ میں کشیدگی پورے خطے کیلئے خطرہ ہے: وزیرخارجہ

مشرق وسطیٰ میں کشیدگی پورے خطے کیلئے خطرہ ہے: وزیرخارجہ

2 views

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں کشیدگی پورے خطے کیلئے خطرات کا موجب بن سکتی ہے، کشیدگی میں کمی اور امن کے لیے عملی اقدامات کی ضرورت ہے ۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے واشنگٹن میں مرکز اسٹریٹجک اور بین الااقوامی معالعات

میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت کسی کسی کے سر پر ایران سوار ہے لیکن

مشرقی وسطیٰ میں کشیدگی کسی کے مفاد میں نہیں ہے، کشیدگی میں کمی اور امن کے لیے عملی

اقدامات کی ضرورت ہے اور سفارت کاری کے ذریعے مسائل کا حل نکالا جا سکتا ہے۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ اس وقت کسی کسی کے سر پر ایران سوار ہے لیکن

مشرقی وسطیٰ میں کشیدگی کسی کے مفاد میں نہیں ہے، کشیدگی میں کمی اور امن کے لیے

عملی اقدامات کی ضرورت ہے اور سفارت کاری کے ذریعے مسائل کا حل نکالا جا سکتا ہے۔

شاہ محمود نے کہا کہ مریکا کے دورے سے قبل ایران اور سعودی عرب کے دورے کیے۔

پاکستان کے سعودی عرب کے ساتھ بہترین تعلقات ہیں اور ایران پاکستان کا قریبی دوست اور ہم سایہ ہے۔

ہم مشرق وسطیٰ میں سفارت کاری سے مسائل کا حل چاہتے ہیں، پاکستان صرف امن کا شراکت دار ہے۔

وزیرخارجہ نے بھارت سے متعلق کہا کہ بھارت کے ہندو انتہا پسند چہرے سے سیکیولرازم کا ماسک

گر چکا ہے اور مودی کے انتہاپسند عزائم بے نقاب ہو چکے ہیں۔

انکا مزید کہنا تھا کہ بھارت میں روز کوئی نہ کوئی سیاستدان یا فوجی افسر پاکستان کے خلاف زہر اگلتا رہتا ہے

لیکن دہشتگردی کی منصوبہ بندی اور الزام پاکستان پر ڈالنے کی سازشیں بے نقاب ہو چکی ہیں۔

کشمیر کے معاملے پر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں طویل انٹرنیٹ بندش کی مثال

کسی جمہوری ملک میں نہیں ملتی اور شہریت ترمیمی بل بھارت کے سیکولر تشخص پر سوالیہ نشان ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشتگری اور انتہاپسندانہ اقدامات خطے میں امن کے لیے شدید خطرہ ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر کی صورت حال پر تشویش ہے، ہم نے صدرٹرمپ کی ثالثی کی

پیشکش کا خیرمقدم کیا امریکا جنوبی ایشیاء میں اثر و رسوخ رکھتا ہے، مسئلہ کشمیر کے حل کے لیےکردار ادا کر سکتا ہے۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *