ملک بھر میں آٹے کا بحران ، اونچے دام اور عوام پریشان

ملک بھر میں آٹے کا بحران ، اونچے دام اور عوام پریشان

10 views

ملک بھر میں آٹے کے بحران کے باعث قیمتوں کو پر لگ گئے، منافع خوروں نے موقع پر چوکا لگا کر اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں اضافہ کردیا۔

ملک بھر میں آٹے کا بحران شدت اختیار کرنے لگا، سندھ اور کے پی کے میں آٹا نایاب ہوگیا۔

یوٹیلیٹی اسٹورز سے بھی آٹا غائب ہوگیا۔

آٹے کی قیمت میں اضافہ کیوں ؟؟

آٹے کی قیمت میں اچانک اضافے اور بحران سے عوام شدید پریشانی میں مبتلا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹراسپورٹرز کی حالیہ ہڑتال سے ملک میں گندم کی ترسیل متاثر ہونا ہی

آٹے کے بحران کی بنیادی وجہ ہے۔

دوسری جانب پاکستان کسان اتحاد کا کہنا ہے کہ یہ بحران اس وقت شروع ہوا جب

حکومت نے 1300روپے کی قیمت پر کسانوں سے زیادہ مقدار میں گندم نہیں خریدی

جہاں پیداواری لاگت بڑھنے کے باوجود اس قیمت میں گزشتہ کئی سالوں سے اضافہ نہیں کیا گیا۔

ملک بھر کے شہروں میں آٹے کی قیمت

آٹا بحران کے بعد نان بائی ایسوسی ایشن نے بھی قیمتوں میں اضافے کا عندیہ دے دیا ہے۔

پشاور میں آج نان بائی ایسوسی ایشن کی جانب سے ہڑتال کی کال دے رکھی ہے۔

خیبرپختونخوا کے نان بائیوں نے 170 گرام کی روٹی کی قیمت 15 روپے کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

کراچی، حیدرآباد اور لاہور سمیت مختلف شہروں میں فی کلو آٹے کی قیمت 70 روپے تک پہنچ گئی ہے۔

اس وقت لاہور میں چکی کا آٹا 70 روپے میں فروخت ہورہا ہے جبکہ

بعض مقامات پر 20 کلو آٹے کا تھیلا 900 سے 1100 روپے کلو میں دستیاب ہے۔

شہرقائد میں پانچ ماہ کے دوران دس کلو آٹے کی قیمت میں دو سو سے ڈھائی سو روپے

کا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے، اس وقت 10 کلو آٹا 700 روپے میں فروخت ہورہا ہے۔

دوسری جانب کوئٹہ سمیت بلوچستان کے دیگر شہروں میں بھی آٹے کا بحران شدت اختیار کرنے لگا۔

مارکیٹ میں 20 کلو آٹے کی قیمت گیارہ سو بیس روپے تک پہنچ گئی ہے۔

آٹا بحران اور قیمت میں اضافے کا معاملہ سیاست کی نذر

آٹا نایاب ، روٹی مہنگی اور ذخیرہ اندازکے بے لگام ہونے کے بعد صوبائی اور وفاقی حکومت نے

بھی چپ کا روزہ رکھ لیا۔ ایک دوسرے کو ذمہ دار ٹھہرانے لگے۔

وفاقی وزراء  اور پنجاب و خیبرپختوانخوا کی صوبائی حکومتوں نے سندھ حکومت پر انگلیاں اٹھادیں۔

فردوس عاشق اعوان کہتی ہیں سپلائی میں کوتاہی کی ذمہ داری حکومت سندھ پر عائد ہوتی ہے۔

صوبائی وزیر زراعت اسماعیل راہو کہتے ہیں آٹے کا مصنوعی بحران بنی گالا والوں نے پیدا کیا۔

کے پی میں نان بائی ہڑتال پر ہیں کیا وہاں بھی ذمہ دار سندھ حکومت ہے؟

اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے آٹے بحران کی تحقیقات کا مطالبہ کیا کہ معلوم کیا جائے

کس کے حکم پر آٹا بیرون ملک بھجوایا گیا؟ جب ملک میں کمی تھی تو گندم اور آٹا ملک سے باہر کیوں بھیجا گیا؟

آٹا بحران کب دور ہوگا؟؟

عوام کی جانب سے آٹے کی قیمت میں کمی کے مطالبے کے بعد وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت

پر حکومت نے آٹے کے بحران سے نمٹنے کے لیے متعلقہ حکام کو بڑے آپریشن کا حکم دیا ہے۔

وزیراعظم نے چاروں صوبوں کے چیف سیکرٹریز، چیف کمشنرز، ڈپٹی کمشنرز کو فوری کارروائی

کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ذخیرہ اندوزوں اور مہنگا آٹا بیچنے والوں کو فوری گرفتار کر کے ان کے گودام سیل کر دیئے جائیں۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *