اسٹیل ملز ملازمین کے معاملے پر اپوزیشن اراکین کی تنقید

اسٹیل ملز ملازمین کے معاملے پر اپوزیشن اراکین کی تنقید

17 views

پاکستان اسٹیل ملز کے ملزمان کو فارغ کیئے جانے کے معاملے پر اپوزیشن اراکین نے شدید تنقید ہے جس پر حماد اظہر کی جانب سے حکومتی فیصلے کا دفاع کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ میں ہونے والے اجلاس کے دوران اپوزیشن اراکین نے حکومتی فیصلے پر شدید تنقید کی۔

اس دوران پاکستان مسلم لیگ (نون) کے سینٹیر مشاہد اللہ خان نے کہا کہ عمران خان تو کہتے تھے کہ ہم اسٹیل ملز چلا کر دکھائیں گے مگر وہ

ایسا کرنے میں ناکام رہے اور اب جب کہ ملک دیوالیہ ہونے کے قریب ہے ، ان حالات میں عمران خان پچھلی حکومتوں کو قصور وار ٹھہرا رہے ہیں۔

اس دوران سینٹیر مشاہد اللہ خان نے اسد عمرکے مستعفی ہونے کا مطالبہ بھی کیا جبکہ جماعتِ اسلامی کے سینیٹر سراج الحق نے بھی عمران خان

کو اسٹیل ملز سے متعلق اُن کا وعدہ یاد دلایا۔

اسٹیل ملز کے سابق چیئرمین لیفٹینیٹ جنرل ریٹائرڈ عبدالقیوم نے مطالبہ کیا کہ پاکستان اسٹیل ملز کے حوالے سے ایوان میں ایک الگ بحث کرائی جائے ۔

اپوزیشن اراکین کی تنقید کے جواب میں حماد اظہر نے حکومتی فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے بتایا کہ موجودہ حکومت کے آغاز کے وقت اسٹیل

ملز 176 ارب روپے کے خسارے میں مبتلا تھی اور 2018 میں اسٹیل ملز کا قرضہ 210 ارب روپے تک جاپہنچا تھا ۔

حماد اظہر کے مطابق حکومت کو تنخواہوں اور سود کی مد میں ماہانا 70 کروڑ روپے ادا کرنا پڑتا ہے۔

حماد اظہر نے مزید کہا کہ اسٹیل ملز کی بحالی کے لیے نجی سرمایا کاری کو اسٹیل ملز پلانٹ میں لانا ہوگا اور اسٹیل ملز کے قرضوں کو بھی

ری اسٹرکچر کرنا ہوگا تاکہ ملازمین کی تنخواہوں کے مسائل سے نمٹا جاسکے۔

واضح رہے کہ  15 سرمایا دار ادارے اسٹیل ملز کی نجکاری میں دلچسپی رکھتے ہیں تاہم 1800 ایکڑ پر محیط اسٹیل ملز کی زمین لیز آؤٹ

ہونے کے باوجود پاکستان اسٹیل ملز کی ملکیت رہے گی۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *