عجیب شخص تھا ، انسانیت کی بات کرتا تھا

عجیب شخص تھا ، انسانیت کی بات کرتا تھا

27 views

پاکستان کے عالمی شہرت یافتہ سماجی کارکن  عبدالستار ایدھی کو ہم سے بچھڑے 4 برس بیت گئے۔ دکھی انسانیت کی خدمت کا  جو سلسلہ عبدالستار  ایدھی نےشروع کیا وہ بھرپور طریقے سے جاری ہے۔

تحریر ۔۔ غانیہ نورین

عبدالستارایدھی پاکستان کا ایک ایسا نام جنہوں نے اپنی زندگی 6 سے زائد دہائیاں انسانیت کی بے لوث خدمت کیلئے وقف کردی۔

صرف 5 ہزار روپے اپنے فلاحی مرکز ایدھی فاؤنڈیشن کی بنیاد رکھی ، سخت موسم ، تپتی زمین پر بے یارو مددگار

انسانی ہمدردی کے خاطر مخیر حضرات سے چندہ جمع کیا۔

عوام کی جانب سے بے لوث محبت اور امداد سے انہوں نے پہلی ایمبولینس خریدی جو بعد میں دنیا کی سب سے بڑی رضاکار ایمبولینس سروس ثابت ہوئیں۔

یہی وجہ ہے کہ پاکستان یا باہر ممالک میں ہونے والی ناگہانی واقعات میں سب سے پہلے ایدھی ایمبولینس اور اسکے رضاکار اپنی جان کی پروا کیے

بغیر انسانی خدمت میں اپنے آپ کو پیش کردیتے ہیں۔

سادگی اور سچائی سے بھرپور اس شخص نے بے سہارہ خواتین ، بیواؤں ، گھر سے بے دخل بوڑھے ضعیف ،خواجہ سراؤں اور لاوارثوں

کو سر چھپانے کیلئے چھت فراہم کی یہاں تک کے پاکستان کا سب سے بڑا سرد خانہ بھی قائم کیا۔

عبدالستار ایدھی نے جانوروں کے لیے بھی پناہ گاہیں قائم کی جبکہ ایدھی صاحب نے غیر مسلموں کی بھی کفالت کا ذمہ لیتے ہوئے

سخاوت کی ایک نئی مثال قائم کی۔

کچھ لوگوں کا ماننا ہے کہ ایدھی صاحب دنیا کے امیر ترین شخص تھے، انہوں نے نہ صرف اپنی دولت 2400کے قریب ایمبولینسز ، 3ائیر

ایمبولینس ،300ایدھی سنٹرز ، 8اسپتالوں کو خدمت خلق کیلئے وقف کر دی تھی۔

جبکہ اپنی ساری زندگی کا سکون ، آرام اور اہل و عیال بھی انسانی خدمت کے لیے قربان کردیا اور دنیا سے رخصت ہوتے وقت بھی

اپنی آنکھیں انسانیت کی خدمت پر نچھاور کر دیں۔

اپنی سماجی خدمات میں بے مثال عبدالستار ایدھی 8 جولائی 2016ء  میں  گردوں کے عارضے میں مبتلا ہو کر 88 سال کی عمر میں انتقال کر گئے تھے۔

انکی خدمات کے بدولت کے انہیں سرکاری اعزاز کیساتھ انہیں ایدھی ویلیج میں دفنا گیا۔عبدالستار ایدھی کو ان کی خدمات کے

اعتراف میں 1989  میں نشان امتیاز  سے نوازاگیا۔

ڈھونڈو گے اگر ملکوں ملکوں

  ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *