کے الیکٹرک کا سپریم کورٹ کے ہر حکم ماننے سے انکاری

کے الیکٹرک کا سپریم کورٹ کے ہر حکم ماننے سے انکاری

49 views

سپریم کورٹ کے سخت احکامات کے بعد بھی کے الیکڑک اپنی ہٹ دھرمی میں قائم رہا، کراچی کے مخلتف علاقوں میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ تاحال جاری ہے۔

صبحین عماد

سپریم کورٹ کی برہمی اور سخت کارروائی کے حکم کے بعد کراچی والوں نے ایک امید کی کرن دیکھی کہ اب شاید کے الیکٹرک والے

ہوش میں آجائینگے اور بجلی کے معامالات بہتری کی طرف لےجانے کی کوشش کرینگے لیکن کے الیکٹرک نے تو سپریم کورٹ کے

ہر حکم کو ایک کان سے سن کہ دوسرے سے نکال باہر کرکے ہوا میں اڑا دیا ۔

چیف جسٹس آف پاکستان نے چیئرمین نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) کو ہدایت کی کہ کراچی میں ایک منٹ کے لیے

بھی بجلی جائے تو کے الیکٹرک کے خلاف کارروائی کریں۔

چیف جسٹس نے اور بھی ریمارکس دیتے ہوئے کراچی میں بجلی کی بحالی کا فوری حکم دیا تھا لیکن ایسا لگتا ہے کہ کے

الیکٹرک کے سر پر جوں بھی نہ رینگی بجلی کی بحالی تو دور شہر بھر میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ بھی مزید بڑھا دیا گیا ہے۔

صارفین کے مطابق لیاقت آباد سی ون ایریا، شاہ فیصل ٹاؤن، کھارادر، نیا آباد کھڈا مارکیٹ، سرجانی، ملیر، لانڈھی، اورنگی ٹاؤن اور

نیو کراچی سمیت مضافاتی علاقوں میں لوڈ شیڈنگ کا نارمل دورانیہ 10 سے 14 گھنٹے ہے جب کہ کبھی کبھی اور

کہیں کہیں ایسا بھی ہے کہ بجلی جاکر آنے کا نام ہی نہیں لیتی۔

اس کے علاوہ ڈیفنس، کلفٹن، پی ای سی ایچ ایس، گلشن اقبال، نارتھ ناظم آباد، فیڈرل بی ایریا اور نارتھ کراچی کے مستثنیٰ

علاقوں میں بھی 3 سے 4 گھنٹے غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے۔

خیال رہے کہ چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار احمد نے کے الیکٹرک کے تفصیلی آڈٹ کا حکم دے دیا ہے اور ساتھ ہی ریمارکس

دیے کہ شہر میں کرنٹ لگنے سے جتنی ہلاکتیں ہوئیں ان کے مقدمات میں سی ای او کے الیکٹرک کا نام شامل کیا جائے۔

دوران سماعت جسٹس گلزار احمد نے نیپرا کو ہدایت کی کہ کراچی والوں کی بجلی بند کرنے پر جتنا جرمانہ لگتا ہے لگائیں

کے الیکٹرک نے کراچی میں کچھ بھی نہیں کیا، پورے کراچی میں ارتھ وائر کاٹ دی ہیں، ان کے خلاف قتل کے کیس بنائیں۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *