یہ سانحہ تو کسی دن گزرنے والا تھا،،میں بچ بھی جاتا تو مرنے والا تھا

 یہ سانحہ تو کسی دن گزرنے والا تھا،،میں بچ بھی جاتا تو مرنے والا تھا

26 views

اردو زبان اورتنز و مزاح کے ساتھ ساتھ سنجیدگی کا ایک خاص انداز رکھنے والے مشہور و معروف شاعر راحت اندوری 70 سال کی عمر میں دنیائے فانی سے کوچ کرگئے، اُردو زبان بالخصوص مشاعروں کی دُنیا ایک باکمال شاعر سے محروم ہوگی۔

صبحین عماد

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق راحت اندوری میں ٓ کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی تھی اور وہ بھارتی شہر اندور کے اسپتال میں زیر علاج تھے۔

اردو مشاعروں کی جان سمجھے جانے والے راحت اندوری ذیابیطس، گردوں اور دل کے عارضے میں بھی مبتلا تھے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ کورونا کے علاج کے دوران ہی انہیں دل کے 2 دورے پڑے جو جان لیوا ثابت ہوئے۔

راحت اندوری نے انتقال سے کچھ ہی دیر پہلے سوشل میڈیا پر دعاؤں کی درخواست کی تھی اور کہا تھا کہ وہ ٹوئٹر پر اپنی صحت کے حوالے سے آگاہ کرتے

رہیں گے۔

راحت اندوری کی پیدائش یکم جنوری 1950 کو پوئی تھی۔ اندور کے ہی نوتن سکول میں انھوں نے ہائیر سیکنڈری کی تعلیم حاصل کی اوروہیں کے اسلامیہ

کریمیہ کالج سے انھوں نے گریجوئیشن کرنے کے بعد برکت اللہ یونیورسٹی سے ایم اے کیا۔

ایک سنجیدہ شاعر ہونے کے ساتھ ساتھ وہ نوجوان نسل کی نبض تھامنا خوب جانتے تھے۔ اس کی ایک مثال ہے ان کینظم ’بلاتی ہے مگر جانے کا نہیں‘ جو

سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی تھی ۔

راحت اندوری نے اردو ادب میں پی ایچ ڈی کر رکھی تھی اور طویل عرصہ درس و تدریس سے وابستہ رہے، انہوں نے بالیوڈ فلموں کے لیے گیت بھی لکھے

تھے، جن میں ’مرڈر‘ اور ’منا بھائی ایم بی بی ایس‘ شامل ہیں۔

اس کے علاوہ انہوں نے کئی نظموں اور شاعری کے مجموعے لکھے ہیں ان کے انوکھے اور پراثر انداز بیاں کی بناء پردنیا بھر میں ان کے قدر دان موجود

تھے۔ راحت اندوری کی کئی نظمیں اور شعر زبان زد عام ہیں اوران کے شعربھارت کے سیاسی جلسے جلوسوں میں بھی موحول گرما دیتے ہیں۔

ایسے شاعر کم ہی پیدا ہوتے ہیں ان کی آواز و شعر و شاعری کا انداز رہتی دنیا تک مداحوں کے دلوں میں زندہ رہے گا ۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *