imran 808x435

گلگت بلتستان کو صوبائی اسٹیٹس دینے کا فیصلہ کیا ہے: وزیر اعظم

238 views

وزیراعظم عمران خان نے گلگت بلتستان کو صوبائی اسٹیٹس دینے کا فیصلہ کرلیا،انکا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کو 5 واں صوبہ بنا رہے ہیں اور اس کا فیصلہ اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل کی قرارداد کے تحت کیا ہے۔

غانیہ نورین

اے پی پی کے مطابق اتوارکو گلگت میں گلگت بلتستان کی آزادی پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام کو

گلگت بلتستان کو عبوری صوبائی حیثیت دینے پربھی مبارکباد دینا چاہتے ہیں، یہ اس علاقہ کے نوجوانوں کا ایک بڑا اوردیرینہ مطالبہ تھا، ہم نے یہ فیصلہ اقوام

متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد کومدنظررکھ کر کیاہے۔

Image

وزیراعظم نے کہاکہ علاقہ میں انتخابات کے موقع پروہ ترقیاتی منصوبوں پربات نہیں کرسکتے تاہم موجودہ حکومت کی ترقیاتی پالیسی کا محورمعاشرے کے

غریب اورکمزورطبقات اوردہائیوں سے ترقی سے پیچھے رہنے والے سابق فاٹا، بلوچستان، پنجاب کے مغربی اضلاع ، اندرون سندھ اورگلگت بلتستان کو ترقی

کے مرکزی دھارے میں لانا ہے، انشاءاللہ آنیوالے دنوں میں حکومت کا ترقیاتی پروگرام ان علاقوں کی طرف مرکوزہوگا۔

وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان کے مشرقی ہمسایہ ملک ہندوستان میں 73 برسوں میں ایک ایسی حکومت برسراقتدارآئی ہے جو سب سے زیادہ انتہاپسند ہیں، یہ

مسلمانوں اورپاکستان سے نفرت کرنے والی حکومت ہے، نریندرمودی کی حکومت مسلمانوں کے خلاف اقدامات کررہی ہے، سیٹزن شپ اوررجسٹریشن کے

بھارتی قوانین اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے، ان قوانین کا مقصد یہ ہے کہ مسلمان برابرکی حیثیت کے شہری نہیں ہے ۔5 اگست 2019 کو نسل پرست

اورہندوواتواکے نظریہ کی پرچارک نریندرامودی کی حکومت نے مقبوضہ کشمیرمیں جوکچھ کیا ہے اس کے تناظرمیں دیکھنے کی ضرورت ہے کہ پاکستان

میں ایک مضبوط فوج اورسیکورٹی فورسز کا ہونا کتنا ضروری ہے۔

وزیراعظم نے کہاکہ کوئی ہفتہ ایسے نہیں گزرتا جب ہماری سیکورٹی فورسز کے جوان اپنی جانوں کی قربانی نہ دے رہے ہوں، سابق فاٹا سے لیکر بلوچستان

اورکراچی میں ایک منصوبہ کے تحت ہونیوالی دہشت گردی کے مقابلہ کیلئے ہماری سیکورٹی فورسز کھڑی رہی اوراپنی جانوں کی قربانیاں دیں ۔ہم خوش

قسمت ہیں کہ ہماری سیکورٹی فورسزنے گزشتہ 15 بیس برسوں میں دہشت گردی کا کامیابی اورجرات کے ساتھ مقابلہ کیا اورملک کو محفوظ بنایا ، اس کی

وجہ سے پاکستان کا وہ حال نہیں ہواجو باقی مسلمان ممالک کا ہوا، ہم اپنی سیکورٹی فورسز کوداددیتے ہیں ۔

وزیراعظم نے کہاکہ ہمیں پتہ ہے کہ مودی حکومت پاکستان میں دہشت گردی کی شکل میں نہیں بلکہ عالموں کوقتل کرکے شیعہ سنی فسادات کے ذریعہ

انتشارپھیلانے کی کوششیں کررہی ہے، کلبھوش یادیونے بتایا تھا کہ کس طرح بھارت بلوچستان اورکراچی میں دہشت گردی اورانتشارپھیلانے کی کوشش

کرتارہا۔

وزیراعظم نے کہاکہ وہ پاکستان کی انٹلی جنس ایجنسیوں کو داددیتے ہیں کہ انہوں نے ان کے انتشارپھیلانے والے عزائم اورمنصوبوں کوپاش پاش کردیا۔

وزیراعظم نے کہاکہ ان لوگوں کا مفاد پاکستان کے مفاد کے خلاف ہے، یہ ثابت بھی ہواہے ، یہ سب اکھٹے ہوگئے ہیں، اوربلیک میلنگ کی کوشش کررہے ہیں

انہوں نے معیشت پرمجھے بلیک میل کرنے کی کوشش کی ، پھرکہاکہ الیکشن میں دھاندلی ہوئی ہے ہم نے کہاکہ جتنے حلقے کھولناہے کھول دیتے ہیں۔

اللہ کاشکرہے کہ جس معیشت کویہ دیوالیہ ہونے کے قریب چھوڑ گئے تھے وہ درست سمت میں گامزن ہوچکی ہے،معیشت کودرست اورمضبوط بنانے کیلئے ہم

اپنی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں، ان لوگوں نے پھرکورونا پرکوشش کی ، آج دنیا اعتراف کررہی ہے کہ جس طرح پاکستان کورونا سے نکلا ہے شائد ہی

کوئی ملک نکلا ہوں، فیٹف پرہندوستان پاکستان کوبلیک لسٹ میں ڈالنے کی پوری کوشش کررہاتھا، اس پربھی اپوزیشن نے بلیک میل کرنے کی کوشش کی، اس

پربھی میں بلیک میل نہیں ہوا، اس ناکامی کے بعد انہوں نے پاکستان کی فوج ، آرمی چیف اورآئی ایس آئی کے سربراہ پربندوقیں تان لیں ہیں، میں اللہ

کاشکراداکرتا ہوں کہ اگریہ لوگ آرمی چیف اورآئی ایس آئی کے چیف کے خلاف باتیں کررہے ہیں توان کومنتخب کرنے کامیرافیصلہ بالکل ٹھیک تھا،اگریہ

ڈاکوان کے خلاف بول رہے ہیں تو اس کامطلب ہے کہ وہ بالکل ٹھیک لوگ ہیں۔

وزیراعظم نے کہاکہ ملسمانوں کی یہ تاریخ رہی ہے کہ انہیں سب سے زیادہ نقصان ذاتی مفاد کیلئے فائدہ اٹھانے والے میرجعفر اورمیرصادق جیسے لوگوں نے

پہنچایا ہے، قران کریم میں منافق کا درجہ کافرسے نیچےرکھا گیاہے، جنگ خندق میں نبی کریمﷺ کفارمکہ کے ساتھ ساتھ منافقین کا مقابلہ بھی کررہے تھے

اسلئے اللہ نے کہاکہ منافق کا درجہ کافر سے نیچے ہوتا ہے ، آج ہم پاکستان میں میرجعفر، میرصادق اورمیرایازصادق کامقابلہ کررہے ہیں، یہ وہ لوگ ہیں جوآج

نریندرامودی کی زبان بول رہے ہیں، دنیا نے دیکھا کہ کس طرح پلوامہ کے واقعات کے بعد پاکستان نے کس طرح کا طرزعمل دکھایا، مجھے کئی سربراہان

مملکت کی طرف سے مبارکبادکے پیغامات موصول ہوئے تھے،یہ لوگ کہہ رہے کہ پاکستان نے ڈرکی وجہ سے یہ فیصلہ کیا۔

وزیراعظم نے کہاکہ ان کامقصد یہ ہے کہ کسی نہ کسی طرح عمران خان بلیک میل ہوکران کی لوٹی ہوئی اربوں روپے کی رقم جو یہ لوگ باہرلیکرگئے ہیں ان

کیلئے این آر اودیا جائے ، میں ساری قوم کو کہتاہوں کہ عمران خان کبھی بھی ان ڈاکووں کومعاف نہیں کرے گا۔

وزیراعظم نے کہاکہ یہ عدلیہ میں کوشش کررہے ہیں کہ ایک جج کواوپرچڑھا دیں، جب حدیبیہ پیپرکے کیس میں ان کومعاف کیا گیا تو وہ عدلیہ ٹھیک تھی لیکن

جب ان کے خلاف 5 ججوں پرمشتمل بینچ کا فیصلہ آتا ہے، جب باہربھاگے ہوئے شخص کے خلاف منی لانڈرنگ کا فیصلہ آتا ہے توتب عدلیہ بری بن جاتی

ہے، اسی طرح فوج کے اوپردباﺅ ڈالاگیاہے یہ صرف اورصرف کوشش ہے کہ کسی طرح ہم دباو میں آکر انہیں معاف کردیں۔

وزیراعظم نے کہاکہ معیشت پرہم زورلگارہے ہیں اوریہ سلسلہ جاری رہے گا، معیشت کی سمت درست ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ قانون کی بالادستی پراب

پورازورلگائیں گے، ریاست کے اداروں کے ذریعہ قانون کی بالادستی کویقینی بنایا جائیگا، دباﺅ ڈالنے والوں کو قانون کے نیچھے لائیں گے۔

وزیراعظم نے کہاکہ آنیوالے دنوں میں دیکھیں گے کس کی ٹانگیں کانپتی ہیں اورکن کے ماتھوں پرپسینہ آتا ہے۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *