سیکیورٹی ایپلی کیشنز کے 5 بہترین عمل

سیکیورٹی ایپلی کیشنز کے 5 بہترین عمل

46 views

انفارمیشن ٹیکنالوجی نے جہاں وقت کے ساتھ ساتھ جدت پکڑی ہے وہیں ایپلی کیشنز اور سوفٹ ویئرز کی حفاظتی اقدامات پر بھی سوالات اٹھنے لگے ہیں،اس دور میں ذاتی معلومات، ڈیٹا پرائیویسی اور سیکیورٹی خدشات ایک مستقل مسئلہ ہے لیکن اگلی دہائی میں ایپلی کیشنز سیکیورٹی ایک بڑا اور اہم معاملہ ہوگا۔

غانیہ نورین

کوئی بھی آرگنائزیشن اپنے سوفٹ ویئر اور ایپلی کیشنز کو ایم سیٹ ویب سائٹ کے بتائے ہوئے 5 بہترین عوامل پر عمل کرکے محفوظ بناسکتے ہیں۔

٭اپنے اثاثوں کا سراغ لگائیں

کسی بھی آرگنائزیشن کو چایئے کہ وہ اپنے اثاثوں کا سراغ لگائیں، تاکہ آپ اپنے پاس موجودہ چیزوں کی حفاظت کرسکیں۔

اپنے اثاثوں پر نظر رکھنا آپ کو مستقبل میں پیش آنے والی مشکلات سے بچا سکتا ہے،  آپ کو یہ یقینی بنانا چاہئے کہ آپ اس عمل کو زیادہ سے زیادہ خود کار بنائیں ، آرگنائزیشنز کے لئے یہ ایک چیلنج ہے کہ وہ اپنی ترقی کو جاری رکھیں۔

اپنے اثاثوں کا سراغ لگانے کے ساتھ ساتھ ، ان کی درجہ بندی کرنے میں وقت نکالیں ، یہ مشاہدہ کریں کہ آپ کے کاروباری کرداروں کے لئے کون سی چیز  اہم ہیں اور کن چیزوں کی اہمیت کم ہے۔

٭ خطرات کا اندازہ لگائیں

ایک بار جب آپ اپنے پاس تحفظ فراہم کرنے کی فہرست تیار کرلے تو آپ باآسانی اپنے خطرات کو بھی واضع کرسکتے ہیں جبکہ اسے دور کرنے کا طریقہ کار بھی نکال سکتے ہیں۔

آرگنائزیشن کو یہ جاننے کی بھی ضرورت ہے کہ آپ کی درخواست کو سائبر کرائم کن طریقوں سے استعمال کرسکتا ہے، کسی بھی حملے کو روکنے یا ناکام بنانے کے لیے آرگنائزیشن کے پاس متبادل راستے بھی ہونے چایئے۔

آپ کو توقعات کے بارے میں حقیقت پسندانہ ہونے کی بھی ضرورت ہے کہ آپ کتنا محفوظ ہوسکتے ہیں۔ تاکہ سائبر خطرات کے دوران آپ اپنا دفاع کرسکیں ۔

آپ کو یہ بھی حقیقت سمجھنے کی ضرورت ہے کہ آپ کی ٹیم طویل مدتی میں کس طرح کے اقدامات برقرار رکھ سکتی ہے۔

٭سوفٹ ویئر اپ ڈیٹ

تجارتی دکانداروں یا اوپن سورس کمیونٹی کی تازہ اپ ڈیٹ کے ساتھ اپنے سافٹ ویئر کو ٹھیک کرنا ایک سب سے اہم اقدام ہے جو آپ اپنے سافٹ ویئر کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے کر سکتے ہیں۔

جب کسی خامی کو صحیح طریقے سے بے نقاب کیا جاتا ہے اور منصوبے کے مالکان کو اطلاع دی جاتی ہے تو اس کے بعد عوامی استعمال کے لیے سیکیورٹی دستورالعمل اور ڈیٹا بیس پر اس خامی کو شائع کیا جاتا ہے۔ تو ڈویلپرز سافٹ ویئر کے تازہ ترین ورژن میں اپ گریڈ کرنے میں محتاط رہ سکتے ہیں تاہم آٹو میٹک اپ ڈیٹ کا آپشن زیادہ کارآمد ہوسکتا ہے۔

٭ایس ڈی ایل سی

آرگنائزیشن کو ہر خطرے سے نمٹنے کے لیے ایک منصوبہ بندی کی ضرورت ہوتی ہے ،سافٹ ویئر ڈویلپمنٹ لائف سائیکل (ایس ڈی ایل سی) ماڈل ایک تصوراتی فریم ورک ہے جو سافٹ ویئر ڈویلپمنٹ پروجیکٹ میں دیکھ بھال تک منصوبہ بندی سے لے کر تمام سرگرمیوں کو بیان کرتا ہے۔ یہ عمل متعدد ماڈلز  کے ساتھ وابستہ ہےجو کہ مختلف ٹاسک ، کام اور سرگرمیوں سے منسلک ہوتے ہیں۔

٭ ریمیڈیشن آپریشن کو ترجیح

حالیہ برسوں میں خطرات میں تیزی سے اضافہ دیکھنے میں آیا ہے  اور یہ رجحان جلد ہی کسی بھی وقت ختم ہونے کا کوئی نشان نہیں دکھاتا ۔ جب اس کی اصلاح کی بات آتی ہے تو ڈویلپرز کو سخت مشکل ہوتی ہے۔ کام کی وسعت کو دیکھتے ہوئے  ان ٹیموں کے لئے اپنی درخواستوں کو محفوظ رکھنے کی ترجیح بہت ضروری ہے۔

ایسا کرنے کے لئے خطرہ کی شدت کو جاننے کے لیے کہ خطرہ کس نوعیت کا ہے؟؟ جانچ پڑتال کی ضرورت ہوتی ہے۔

یاد رہے کہ آرگنائزیشن اسی وقت ترقی کرسکتا ہے جب ڈویلپرز کام کے عوامل کو مدنظر رکھتے ہوئے خود کو پہلے ہی سے خطرات سے نبٹنے کے لیے اپنے آپ کو تیار رکھیں۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *