dinaneer 808x454

پارٹی ہو رہی ہے اور ہماری ترجیحات

246 views

بحثیت قوم ہم بھی عجیب لوگ ہیں جس کو چاہیں راتوں رات اسٹار بنا دیں اور جس کی چاہیں عزت کی دھجیاں اڑا دیں۔۔ کسی کو مشہور کرنا ہو تو اس قوم کو بس ٹرک کی بتی کے پیچھے لگانے کی دیر ہے بس پھر کیا انتہائی کم وقت میں لاکھوں شئیرز ، ہزاروں میمز ،سیکڑوں کی تعداد میں ٹرولنگ کافی ہے۔۔

تحریر: شہلا محمود

سوشل میڈیا نے جہاں انسانوں کی زندگیوں میں کئی آسانیاں پیدا کی ہیں وہیں اس پلیٹ فارم کو استعمال کرنے والے یہ نہیں جانتے کہ ان کے لیے وقت گزاری کی خاطر کیا جانے والا کوئی ٹوئیٹ ،پوسٹ یا میم کسی دوسرے انسان کی زندگی پر کس قدر گہرا اثر چھوڑ سکتا ہے۔۔

حال ہی کی مثال لے لیں پاکستان کے شمالی علاقہ جات کی سیر کے دوران دنانیر مبین نامی ایک لڑکی نے اپنے دوستوں کے ساتھ شغل مستی کرنے کی وڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر دی۔۔اس وقت شاید لڑکی کے گمان میں بھی نہ تھا کہ راتوں رات اس کی یہ وڈیو سوشل میڈیا پر طوفان مچا دے گی۔ جیسا کہ پہلے بھی ذکر کیا کہ ہماری قوم کو تو بس ٹرک کی بتی کے پیچھے لگنا ہوتا ہے۔۔

پاکستان بھر کے سوشل میڈیا صارفین نے اس شغل مستی کی وڈیو کو اپنے اپنے انداز سے بنا کر اپ لوڈ کرنا شروع کر دیا اور دیکھتے ہی دیکھتے اس لڑکی کا وڈیو میں کہا گیا جملہ پارٹی ہو رہی ہےِ  زبان زد عام ہو گیا۔۔

عام افراد سے لے کر شوبز کے ستاروں تک ۔۔سیاسی شخصیات سے لے کر مشہور کھلاڑیوں تک ہر دوسرے شخص نے اس وڈیو کو وائرل کرنے میں اپنا حصہ ضرور ڈالا۔۔

ٹوئیٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بنا دنانیر مبین کے انسٹا گرام فالوارز کی تعداد میں دن دگنی رات چگنی اضافہ ہوا اور راتوں رات ملنے والے اس شہرت کو خوب انجوائے بھی کیا۔

سوشل میڈیا اکاونٹس کی ٹائم لائن پارٹی ہو رہی ہے کہ ہیش ٹیگ سے بھری پڑی ہے۔۔

اسی دوران تعلیم کے شعبے میں بین الاقوامی سطح کی ایک خبر آئی جس کے مطابق دسمبر میں ہونے والے ایسوسی ایشن آف چارٹرڈ سرٹیفائیڈ اکاونٹس(اے سی سی اے) کے فننانشل رپورٹنگ کے امتحان میں پاکستان کے شہر لاہور سے تعلق رکھنے والی طالبہ زارا نعیم نے پہلی پوزیشن حاصل کی

۔زارا نعیم کے مقابلے میں 179 ممالک کے لاکھوں طلبا تھے جنہیں زارا نے اپنی ذہانت سے مات دے دی۔

کہنے کو یہ خبر بہت بڑی تھی کہ پاکستان سے تعلق رکھنے والی لڑکی نے 179 ممالک کے ذہین افراد کو شکست دے دی لیکن افسوس اس بات کا ہے کہ زارا نعیم کو بلاگر دنانیر مبین جیسی شہرت نہ مل پائی۔

یہاں بات دونوں لرکیوں کے موازنے کی نہیں کی جا رہی بلکہ بتانا یہ مقصود ہے کہ یہ ہے ہماری ترجیحات۔۔اس موازنے سے اندازہ ہوتا ہے کہ ہم پاکستانی تعلیم کو اپنی ترجیح میں کہاں رکھتے ہیں۔۔

ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ جس تیزی سے دنانیر مبین کی وڈیو پر دھڑا دھڑ میمز بنی، ری ایکشن آیا ویسے ہی زارا نعیم کی کامیابی کو اس سے زیادہ تیزی سے سراہا جانا چاہیے تھا۔۔افسوس اسی بات کا تو ہے کہ ہمارے ہاں تعلیمی قابلیت کو سراہا ہی کب جاتا ہے زیادہ سے زیادہ ایک آدھ نیوز چینل خبر نشر کر دیتے ہوں گے یا بھر کوئی اخبار خبر شائع کر دیتا ہو گا۔۔لیکن جیسی پذیرائی بلاگر دنانیر مبین کو ملی ویسی شہرت شاید ہی کسی کو ملتی ہو گی جس نے تعلیمی میدان میں کوئی کارنامہ سر انجام دیا ہو۔۔

کیونکہ تعلیم کا شعبہ نہ تو کھبی ہمارے حکمرانوں کی ترجیح رہا اور نہ ہی بحثیت قوم ہم نے کھبی اس حوالے سے آواز اٹھائی۔۔

 بس جیسے چل رہا ہے چلنے دو کے مصداق ہر کوئی چین کی بانسری بجا رہا ہے۔۔۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *