آرمینیا میں فوج اور حکومت آمنے سامنے ، مارشل لاء کا خطرہ

آرمینیا میں فوج اور حکومت آمنے سامنے ، مارشل لاء کا خطرہ

24 views

آذربائیجان سے شکست کے بعد آرمینیا کو ایک اور بڑا دھچکا، آرمینیا کے وزیراعظم نے مسلح افواج کے سربراہ کو برطرف کردیا ہے۔

غانیہ نورین

آرمینیا کے وزیراعظم نیکول پشینین پر اپنی حکومت کا تختہ پلٹنے کا خطرہ منڈلانے لگا، نگورنو کاراباخ پر جاری جنگ میں اپنی ہار تسلیم کرنے اور متنازع علاقوں کو باکو کے حوالے سے شدید تنقید کیا جارہا ہے۔

وزیراعظم نیکول کے خلاف احتجاجی مظاہرے بھی جاری ہے جہاں وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا جارہا ہے تاہم وزیراعظم نیکول پشینین نے مسلح افواج کے سربراہ کو برطرف کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر قوم سے براہ راست خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فوج ان کی حکومت کا تختہ الٹ کر ملک میں مارشل لا نافذ کرنا چاہتی ہے۔

فیس بک خطاب میں انہوں نے اپنے حامیوں سے دارالحکومت میں ریلی نکانے کی اپیل کی ان کا کہنا تھا کہ مخالفین کو بتادیں کہ عوام اب بھی میری پشت پر کھڑے ہیں۔

خیال رہے کہ آرمینیا اور آذربائیجان کے متنازع علاقے نگورنوکاراباخ پر جنگ گزشتہ برس ستمبر کو ہوا جس کے دوران ام شہریوں سمیت 5 ہزار سے زیادہ افراد مارے گئے تھے۔

آذربائيجان کی وزارت دفاع کے مطابق اب تک تقریباً 130 ٹینکوں اور بکتر بند گاڑیوں کو تباہ کیا جا چکا ہے، 200 سے زائد توپ اور میزائل سسٹموں، تقریباً مارٹر دفاعی سسٹموں، 6 کمانڈ منیجمنٹ اور کمانڈ مانیڑنگ مقامات، 5 ایمونیشن ڈپووں، تقریباً 50 اینٹی ٹینک اسلحے اور 55 فوجی گاڑیوں کو تباہ کر دیا گیا ہے۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *