8 6 808x454

سڑکوں پر بسنے والے معصوم فرشتوں کا دن ۔۔

139 views

افلاس کی بستی میں جاکر تو دیکھو
وہاں بچے تو ہوتے ہیں مگر بچپن نہیں ہوتا

صبحین عماد

کون ہیں یہ سڑکوں محلوں گلیوں میں گھومتے ننگے بھوکے میلے کچیلے سے بچے؟ کہاں سے آجاتے ہیں کبھی بھیک مانگتے ہیں تو کہیں کچرا چن چن کے جمع کرتے ہیں بکھرے بال،دھول سے اٹے چہرے۔ گندے پھٹے کپڑوں میں ملبوس جو جگہ جگہ دیکھنے والے یہ بچے آخر ہیں کون انسان بھی ہیں کہ نہیں؟ ۔

جنہیں کبھی ہم دھتکار دیتے ہیں تو بھی ہم بھگا دیتے ہیں کبھی دو پیسے دے کر ڈانٹ دیتے ہیں یہ سڑکوں پر خانہ بدوش بچے کوئی اور نہیں یہ ہمارے ہی معاشرے کی بد نما حقیقت پر مبنی تصویر ہیں جنہیں ہم دیکھ کر بھی نظر انداز کرتے ہیں

Pakistan's street children | Pakistan News | Al Jazeera

یہ وہ بے حسی کی منہ بولتی داستان ہیں جنہیں ہم سننا نہیں چاہتے ،یہ بچے کوئی عام بچے نہیں بلکہ یہ ہمارے ملک ہمارے معاشرے ہمارے رویوں ہمارے اخلاق ایک منہ چڑاتا چلتا پھرتا سچ کا ثبوت ہیں اسی لیے ہم جہاں جہاں ہوتے ہیں ہمیں یہ بچے نظر آتے ہیں کہ ہم کبھی توغور کرسکیں کہ یہ ہیں ہم یہ ہے ہماری بے حسی کی اصل کہانی یہ ہے وہ معاشرہ جس پر ہم اکڑتے ہیں یہ ہے وہ کڑوا سچ جسے یہ بچے روز پیتے ہیں یہ ہے وہ تلخ گند غلازت سے بھری سچ کی دنیا جس میں یہ بچے اپنی زندگی گزارتے ہیں۔

UNHCR - UNHCR looks at the economic contribution of Afghan refugees in Pakistan

کہانی کا آغاز کہاں سے کروں ہر بار یہی سوچتے قلم رک جاتا ہے کہتے ہیں بچے معصوم ہوتے ہی دل کے صاف ہوتے ہیں کورا کاغذ ہوتے ہیں جو دیکھتے ہیں وہی سیکھتے اور کرتے ہیں یہ معصوم اورزندگی کی مشکلات سے نا آشنا یہ بھی شاید ایسے اسی لیے ہوگئے کیونکہ ہم نے انہیں ایسا بنا دیا  پاکستان سمیت دنیا بھر میں لاکھوں بے سہارا بچے آسائشوں کے ساتھ ساتھ بنیادی حقوق سے بھی محروم ہیں۔ ان بچوں سے وابستہ مسائل کو اجاگر کرنے کے لئے ہرسال دنیا بھرمیں ‘ورلڈ اسٹریٹ چلڈرن ڈے’ منایا جاتا ہے۔

The Street Child World Cup – World Policy

اس دن کے منانے کا مقصد بغیر گھروں کے گلیوں اور فٹ پاتھوں پر زندگی گزارنے والے بچوں کے حقوق کے متعلق آگاہی فراہم کرنا اور ان بے گھر بچوں کو بھی دیگر بچوں جیسی آسائشیں مہیا کرنا ہے ۔آئین پاکستان میں 14برس سے کم عمر بچوں کی ملازمت پر پابندی عائد ہے مگر پیٹ کی آگ بجھانے کی خاطر یہ کم عمر بچے محنت ومشقت پر مجبورہیںاور پتہ بھی نہیں چلتا کہ یہ آنکھوں میں معصومیت لیے اپنے گھر کے بڑے بن جاتے ہیں بچپن تو کہیں دور ہی چھوٹ چکا ہوتا ہے اور اپنے بچپن ہی نہیں باعزت اور پروقار طرز زندگی سے بھی محروم رہ جاتے ہیں۔

Child Labour in Pakistan. First of all I would like to clarify… | by Imran Ashraf | Medium

سڑکوں پر گھومتے پھرتے یہ بچے بے خبر ہیں کہ کب کون انہیں کس جرم میں استعمال کرلے اور یہ عدم تحفظ کے احساس کے ساتھ زندگی گزارنے پرمجبور ہیں

شاید یہی وجہ ہے کہ یہ بچے جنگ، غربت، گھریلو تشدد اور تعلیمی اداروں میں اپنے ساتھ ہونے والی بدسلوکی سے تنگ آ کر سڑکوں کا رُخ کرتے ہیں، جہاں اور بھی زیادہ مشکل زندگی اُن کی منتظر ہوتی ہے۔ یہی اَن پڑھ بچے بالآخر جرائم کی دُنیا میں قدم رکھ دیتے ہیں، منشیات کے عادی ہو جاتے ہیں یا پھر انتہا پسند تنظیموں میں شامل ہو جاتے ہیں۔ جسمانی اور جنسی زیادتیوں کے سبب یہ بچے مختلف طرح کی بیماریوں میں بھی مبتلا ہو جاتے ہیں۔

Pakistan's waste problem is a recycling industry waiting to be found - Pakistan - DAWN.COM

اس دن کو منانے کا مقصد صرف اس دن تقاریر سیمینارز کرکے منانا نہیں بلکہ ہمارا اصل مقصد ان معصوم بچوں کو وہ زندگی وہ سہولیات فراہم کرنا ہوں گی جس کو ہم اپنا حق سمجھتے ہیں کیونکہ کسی نے سچ ہی کہا ہے کہ انسان غریب پیدا نہیں ہوتا مگر حالات واقعات اور معاشرے کے رویے انسان کو غریب کردیتے ہیں ۔

Children Search Trash to Survive in Iran - Iran News Update

وہ سب معصوم سے چہرے تلاش رزق میں گم ہیں
جنہیں تتلی پکڑنا تھی،جنہیں باغوں میں ہونا تھا ۔

content : sabheen ammad

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *