عیدی آگئی آپکی ۔۔؟؟

عیدی آگئی آپکی ۔۔؟؟

28 views

رمضان کے بعد عید خوشی بھرا تہوار ہے۔ اس خوشی کو  دوسرے کے ساتھ بانٹ کر دوبالا کیا جاتا ہے اسی وجہ سے تو عید کے موقع پر عیدی دی جاتی ہے تاکہ عیدی لینے والے کے چہرے پر خوشی کے رنگ بکھیرے اور دیکھے جا سکیں۔

صبحین عماد

 رمضان کے دوسرے عشرے کے بعد سے ہی ہر ایک کو بس ایک ہی انتظار ہوتا ہے عید کی عیدی کا ۔عیدی ہماری تہذیب اور روایات کا ایک حصہ ہے۔ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ روایات میں تبدیلی آئی ہے لیکن عیدی کی روایت کبھی ماند نہیں پڑی۔

پاکستان کی بات کی جائے تو نقد عیدی پر چاروں صوبوں کے عوام بالخصوص بچوں کا مکمل اتفاق ہے اور اس بات پر بھی اتفاق ہے کہ مہنگائی کی شرح کے حساب سے اس میں اضافہ ہونا چاہیےہر سال بچوں کی مانگ بھی بڑھ جاتی ہے کہ عیدی میں بھی اضافہ کیا جائے یہی وجہ ہے کہ ایک زمانے میں پانچ دس روپے سے کام چل جاتا تھا آج کل کم سے کم ریٹ 500 سے 1000روپے ہے۔ اس سے کم ملنے والی رقم کو کم از کم عیدی نہیں گردانا جاتا۔

نقد عیدی بانٹنے کے لیے باقاعدہ دعوتیں کی جاتی ہیں جہاں مہمانوں کے ساتھ آنے والے بچوں بلکہ جوانوں کو بھی عیدی دی جاتی ہے جبکہ مہمان بھی میزبان کے بچوں کو عیدی دیتے ہیں یہ ایک ایسی روایات ہے جس کی وجہ سے بچے آرام سے ان کے گھر بھی چلے جاتے ہیں جہاں سالا سال نہیں جاتے کیونکہ انہیں معلوم ہوتا ہے جتنا مہمانوں سے ملیں گے اتنی ہی عیدی جمع ہوگی

اگر کسی لڑکی کی منگنی ہو جائے اور شادی ہونے تک جتنی بھی عیدیں آئیں اس کے ہونے والے سسرال سے ہر عید پر اس کے لیے عیدی آتی ہے۔ یہ عیدی کی دوسری قسم ہے۔ اس میں زرق برق لباس، چوڑیاں، مہندی اور ساتھ میں حسب استطاعت یا پھر تعلقات کی نوعیت کی بنیاد پر نقدی بھی ہوتی ہے۔ منگنی شدہ لڑکیان اس رسم کو ہونے والے سسرال پر پہلا حق سمجھتی ہیں۔ لڑکیاں عید پر وہی سب کچھ زیب تن کرتی ہیں و انہیں سسرال کی جانب سے ملا ہوتا ہے اور لڑکیوں کے ساتھ ساتھ سب ہی کو انتظار ہوتا ہے کہ سسرال کی عیدی کب آئے گی اور کیسی آئے گی ۔جبکہ لڑکی والے بھی اپنے داماد کو اسی انداز سے پورے اہتمام کے ساتھ عیدی دیتے ہیں بلکہ عید والے دن بھی لڑکی کے گھر سے آنے والے اپنے داماد کو عیدی دیتے ہیں

عیدی کی تیسری اور سب سے اہم قسم شادی شدہ بیٹی کے لیے عیدی ہوتی ہے۔ بیٹیاں چوں کہ اپنے میکے کو لے کر بہت جذباتی ہوتی ہیں تو شادی کے بعد پہلی عیدی کا تو ان کو شدت سے انتظار ہوتا ہے۔  عید سے پہلے مائیں اپنی بیٹیوں کو عیدی بھجواتی ہیں جس میں کپڑے، جوتے، چوڑیاں، مہندی اور پھل سویاں شامل ہوتی ہے۔میکے سے عیدی کا آنا سب سے بڑی خوشی سمجھا جاتا ہے

رمضان کے آخری عشرے میں بیٹی کے گھر عیدی کے نام پر بعض اوقات پورے خاندان کے کپڑے تک بھیجتے ہیں۔ تاہم زیادہ تر صرف بیٹی اور داماد کو دیتے ہیں۔ اس میں کپڑے جوتے،مہندی اور چوڑیوں کے علاوہ سویاں، چینی، میوہ جات اور دودھ بھی شامل ہوتا ہے۔تو آپ بتا ئیں آپکی عیدی آگئی؟

content : Sabheen Ammad

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *