اسرائیلی مظام: جہادی شیر فلسطین والوں تمہیں فتح مبارک ۔۔

اسرائیلی مظام: جہادی شیر فلسطین والوں تمہیں فتح مبارک ۔۔

120 views

نازل کر اب عیسیٰ کو،اب بھیج خدایا مہدی کو
دیکھ دجال آزاد ہو ئے۔۔اور پھولوں کے کیا حال ہو ئے ۔۔

صبحین عماد

ہر طرف سے اٹھتا یہ کالا دھواں،دلوں کوچیرتی بموں کی آوازیں چاروں جانب ملبوں کے لگے ڈھیر،روتی بلکتی سسکتی یہ آہ و بقا یہ کیسے بچے ہیں جو خون میں لت پت ہیں ننھے ننھے ہاتھوں میں نہ گڑیا ہے نا ٹافیاں ہیں چہرے پر کیوں اتنا خوف طاری ہے؟یہ کون سی جگہ کون سا شہر ہے جہاں لاشوں کا انبار لگا ہے ؟ ہرجانب یہ کیسا شور برپا ہے ؟یہ کس بات کی سزا ہے آخر ایسا کیا گناہ ہوگیا ہے ؟ یہ کیسی جنگ ہے جس میں جنگ سے پہلے ہی جنگ کا فیصلہ ہوگیا ہے ۔۔؟

Israel And Palestine conflict: Gaza City commander was killed

یہ کوئی کہانی یا افسانہ نہیں بلکہ یہ ایک ایسے شہر ایسے شیر جہادی قوم کی داستان ہے جس نے عالم انسان عالم اسلام کو بتا دیا ہے کہ اپنے حق کے لیے ہارنا نہیں ہوتا ،جنگ کتنی ہی مشکل کیوں نہ ہو اس سے بھاگنا نہیں ہوتا ،دشمن کتنا ہی طاقتور کیوں نہ ہو اس سے ڈر کر چھپنا نہیں ہوتا ،یہ داستان ہے اسرائیل کے مظالم بربیت وحشانہ حملوں کو ڈٹ کر سہنے والے فلسطینیوں کی یہ داستان ہے اپنے لیے زمین پر ہی جنت کو فتح کرنے والوں کی ۔

مسئلہ فلسطین بہت بڑا انسانی المیہ ہے اور یہ آج یا کل کی بات نہیں یہ جنگ ایک طویل عرصے سے چل رہی ہے جسے یہودیوں کے بے پناہ سرمائے اور سامراج کے شیطانی کردار نے جنم دیا ہے ۔

اسرائیلی فضائی حملوں میں فلسطینی اموات کی تعداد 67 ہوئی، 17 بچے شامل

فلسطینوں پر اسرائیلی حملے

قبضے کی آگ اسرائیل سے برداشت نہ ہوئی تو مسلمانوں کے مقدس مہینے رمضان المبارک کے آغاز سے ہی مقبوضہ بیت المقدس (یروشلم) میں اسرائیلیوں کی جانب سے فلسطینیوں پر حملوں اور دیگر پرتشدد کارروائیوں کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا جبکہ اس دوران دنیا کے 3 بڑے مذاہب کے لیے انتہائی مقدس شہر میں کشیدگی میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے جس پر پاکستان نے شدید مذمت بھی کی

 قبلہ اول کی تحفظ کی خاطرفلسطینی ڈٹ گئے تھے، یہودیوں کے یوم یروشلم مسجد الاقصیٰ میں مارچ کا منصوبہ پر فلسطینیوں نے رات بھر مسجد الاقصیٰ میں گزاری تاکہ انتہا پسند یہودیوں کو داخلے سے روکا جاسکے، نیتن یاہو نے یہودیوں کے داخلے کے لئے راستہ صاف کرنے کا حکم دیا، جس پر ہزاروں فوجیوں نے پیر کی صبح قبلہ اول پر دھاوا بول دیا۔

اسرائیلیوں نے بے بس فلسطینیوں پر ظلم کا پہاڑ توڑ ڈالا، نمازیوں پر ربڑ کی کوٹنگ والی گولیاں برسائیں، شیلنگ کی، بم بھی پھینکے، مسجد کے قالین کو بھی آگ لگ گئی۔

35 killed in Gaza, 5 in Israel, as violence escalates - The Financial Express

حملوں میں تین سو سے زائد فلسطینی زخمی ہوگئے،، اسکے باوجود فلسطینی جرات کی دیوار بن گئے، اسرائیلی مظالم کے آگے گھٹنے ٹیکنے سے انکار کردیا، قابض فورسز پر خوب پتھراؤ کیا اور آخری دم تک قبلہ اول کے تحفظ کا اعلان بھی کیا۔

بے رحم اسرائیلیوں نے خواتین کو بھی نہ بخشا بے دردی سے گرفتار کیا، بہادر فلسطینی لڑکی ہتھکڑیاں لگتے ہوئے مسکراتی رہی، مسجد الاقصیٰ کے باہر یہودی شہری نے فلسطینیوں پر گاڑی چڑھا دی مگر جنگ یکطرفہ تھی لیکن فتح فلیسطین کے حصے میں ہے ظالم ظلم کی انتہا کررہا ہے سہنے والے کمال کررہے ہیں زمین پر ہی جنت اپنے نام کر رہے ہیں

7 مئی کا حملہ ۔

مقبوضہ بیت المقدس میں جمعہ 7 مئی سے جاری پرتشدد کارروائیاں سال 2017 کے بعد بدترین ہیں جس میں یہودی آبادکاروں کی جانب سے مشرقی یروشلم میں شیخ جراح کے علاقے سے متعدد فلسطینی خاندانوں کو بے دخل کرنے کی طویل عرصے سے جاری کوششوں نے مزید کشیدگی پیدا کی۔

یہ ایک ایسا علاقہ ہے جہاں ایک طویل عرصے سے جاری قانونی کیس میں متعدد فلسطینی خاندان کو بے دخل کیا گیا ہے، اس کیس میں فلسطینیوں کی جانب سے دائر اپیل پر پیر 10 مئی کو سماعت ہونی تھی جسے وزارت انصاف نے کشیدگی کے باعث مؤخر کردیا تھا۔

Escalating the demographic war: The strategic goal of Israeli racism in Palestine – Middle East Monitor

اسرائیلی فورسز کی جانب سے فلسطینیوں پر حالیہ حملے7 مئی کی شب سے جاری ہیں جب فلسطینی شہری مسجد الاقصیٰ میں رمضان المبارک کے آخری جمعے کی عبادات میں مصروف تھے اور اسرائیلی فورسز کے حملے میں 205 فلسطینی زخمی ہوگئے تھے۔

8 مئی کا حملہ

جس کے اگلے روز 8 مئی کو مسجدالاقصیٰ میں دوبارہ عبادت کی گئی لیکن فلسطینی ہلالِ احمر کے مطابق بیت المقدس کے مشرقی علاقے میں اسرائیلی فورسز نے پرتشدد کارروائیاں کیں، جس کے نتیجے میں مزید 121 فلسطینی زخمی ہوئے، ان میں سے اکثر پر ربڑ کی گولیاں اور گرنیڈز برسائے گئے تھے جبکہ اسرائیلی فورسز کے مطابق ان کے 17 اہلکار زخمی ہوئے۔

Israeli police clash with Palestinians at al-Aqsa mosque – video | World news | The Guardian

10 مئی کا حملہ

10 مئی کی صبح اسرائیلی فورسز نے ایک مرتبہ پھر مسجد الاقصیٰ کے قریب پرتشدد کاررائیاں کیں، جس کے نتیجے میں مزید 395 فلسطینی زخمی ہوئے تھے جن میں سے 200 سے زائد کو علاج کے لیے ہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔

Islamic nations hold emergency summit on Israel-Gaza attacks | Associated Press | northwestgeorgianews.com

اسرائیلی فوج کے حملے کے نتیجے میں 300 فلسطینی شہریوں کے زخمی ہونے کے بعد حماس نے اسرائیل میں درجنوں راکٹس فائر کیے تھے جس میں ایک بیرج بھی شامل تھا جس نے بیت المقدس سے کہیں دور فضائی حملوں کے سائرن بند کردیے تھے۔

11 مئی کا حملہ ۔

بعد ازاں 11 مئی کی شب بھی اسرائیلی فضائیہ نے ایک مرتبہ پھر راکٹ حملوں کو جواز بنا کر غزہ میں بمباری کی جس کے نتیجے میں 13 بچوں سمیت جاں بحق افراد کی تعداد 43 تک پہنچ گئی، یہ راکٹ حملے بھی حماس کی جانب سے کیے گئے تھے جس میں 5 اسرائیلیوں کے ہلاک اور متعدد کے زخمی ہونے کا دعویٰ کیا گیا۔

IDF says it hit 70 targets in response to Gaza attacks, including 3 tunnels | The Times of Israel

12 مئی کا دن ۔

غزہ کی وزارت صحت نے 12 مئی کو صورت حال سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیلی فضائی کارروائیوں میں جاں بحق افراد کی تعداد 48 ہوگئی ہے جن میں 14 بچے شامل ہیں اور زخمیوں کی تعداد 300 سے زائد ہوگئی ہے۔

Three children killed as Israel escalates Gaza attacks | The Electronic Intifada

عید الفطر کا دن ۔

اسرائیلی لڑاکا طیاروں نے عید الفطر کے روز بھی اپنی بربریت اور دہشت گردی کا سلسلہ نہ روکا اور غزہ میں بلند و بالا عمارتوں اور دیگر مقامات پر مزید فضائی حملے کیے، جس کے نتیجے میں اب تک جاں بحق افراد کی تعداد 103 تک پہنچ گئی جس میں 24 بچے بھی شامل ہیں۔

Israeli strike on Gaza kills 7, unrest spreads to West Bank - The Financial Express

میڈیا دفاتر پر حملہ

اسرائیل کی غزہ پر بمباری جاری ہے اور اس دوران ایک اور بلند عمارت کو نشانہ بنایا گیا تھا جہاں الجزیرہ اور امریکی خبر ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) سمیت دیگر بین الاقوامی میڈیا کے دفاتر بھی تباہ ہوگئے جو اسرائیلی فوج کی غزہ میں میڈیا کو خاموش کرنےکی بدترین کوشش ہے۔

Israel Strikes Gaza Building With International Media Offices: Report

غیرملکی خبرایجنسیوں کی رپورٹس کے مطابق الجلا ٹاور کے مالک نے میڈیا کو اسرائیلی حملے کے حوالے سے پہلے ہی خبردار کردیا تھا اور عمارت کو خالی کردیا گیا تھا۔

اقوام متحدہ کا ردعمل

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے بھی اسرائیلی مظالم پر تشویش کا اظہا کردیا، انہوں نے صہیونی فورسز سے فلسطین پر مظالم اور مقبوضہ بیت المقدس میں تعمیرات روکنے کا مطالبہ کیا۔

ترک صدر کا فلسطینی صدر سے ٹیلیفونک رابطہ

اسرائیل کی طرف سے فلسطینیوں پر بے پناہ مظالم کے بعد ترک صدر رجب طیب اردوان کا فلسطینی صدر محمود عباس اور حماس کے سربراہ اسماعیل ہانیہ کے درمیان ٹیلیفونک رابطے ہوا ۔

 ترک میڈیا کے مطابق ٹیلیفونک رابطے کے دوران اسرائیل کے حملے کے بعد اور مسجد اقصیٰ کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ترک صدر رجب طیب اردوان نے بھرپور الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ فلسطینیوں پر حملے مسلمانوں پر نہیں بلکہ انسانیت پر حملے ہیں۔ یہ فلسطینیوں پر ظلم و ستم ہیں۔ ترکی مشکل وقت میں اپنے بھائیوں کے ساتھ ہے، پوری دنیا اور مسلم دنیا میں اس مسئلہ کو اٹھائیں گے، بیت المقدس کی حرمت کا دفاع جاری رکھیں گے۔ فلسطینی کاز ہمارے ایجنڈے میں سرفہرست ہے۔

امریکا کا تشویش کا اظہار

وائٹ ہاؤس کے پریس سیکریٹری جین ساکی کا کہنا ہے کہ بائیڈن انتظامیہ نے اسرائیل اور فلسطین کے درمیان بڑھتے ہوئے تشدد پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ہم اسرائیل کی صورت حال کو بہت قریب سے مانیٹر کر رہے ہیں اور موجودہ صورت حال پر ہمیں تحفظات ہیں۔

پاکستان کا اظہار مذمت ۔۔

دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان ‘اسرائیلی قابض فورسز کی جانب سے مسجد اقصی میں معصوم نمازیوں پر حملوں کی شدید مذمت کرتا ہے’۔

کہا گیا کہ اس طرح کے حملے، خاص طور پر رمضان المبارک کے مقدس مہینہ کے دوران، تمام انسانی اقدار اور انسانی حقوق کے قوانین کے منافی ہیں۔

دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ ‘ہم زخمیوں کی جلد صحتیابی کے لیے دعاگو ہیں اور ہم فلسطینی مقصد کے لیے اپنی مستقل حمایت کا اعادہ کرتے ہیں اور عالمی برادری سے ایک بار پھر مطالبہ کرتے ہیں کہ فلسطینی عوام کے تحفظ کے لیے فوری اقدامات اٹھائے’۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ خطے میں پائیدار امن کے لیے ہم ایک بار پھر 1967 سے پہلے کی سرحدوں کے ساتھ اقوام متحدہ اور او آئی سی کی قراردادوں کے مطابق دو ریاستوں کے حل کی ضرورت پر زور دیتے ہیں اور القدس الشریف آزاد اور متصل فلسطینی ریاست کا قابل عمل دارالحکومت ہے۔

دنیا بھر میں احتجاج کا سلسلہ۔

غزہ میں اسرائیل کی وحشیانہ بمباری اور فلسطینیوں کے قتل عام پراحتجاج کا سلسلہ دنیا بھر میں پھیل گیا ہے خاموشی اب ٹوٹنے لگی ہے

غزہ میں اسرائیلی بربریت کے خلاف لندن میں ہونے والے مظاہرے کے دوران ہزاروں افراد نے اسرائیلی سفارتخانےکی جانب بڑھنےکی کوشش کی۔

South Africans protest over Palestinian deaths | Al Arabiya English

اس کے علاوہ امریکا، فرانس، جرمنی، اسپین، جنوبی افریقا، بیلجیئم، انقرہ، بغداد اور لبنان سمیت دنیا کےکئی شہروں میں اسرائیل مخالف ریلیاں نکالی گئیں جبکہ پاکستان میں بھی ملک کے مختلف شہروں میں ریلیاں نکالی جارہی ہیں ہر ایک زبان پر ایک ہی صدا ہے کہ ہم فلسطین کے ساتھ کھڑے ہیں

تازہ صورتحال

فلسطین پر اسرائیل کی وحشیانہ بمباری کا سلسلہ جاری ہے اور غزہ سٹی پر کارروائیوں میں تین عمارت تباہ کردی گئیں اور 10 بچوں سمیت 42 افراد جاں بحق ہوگئے جس کے بعد جاں بحق فلسطینیوں کی تعداد 188 ہوگئی۔

خبر ایجنسی کے  مطابق اسرائیلی لڑاکا طیاروں نےآج صبح غزہ پر 55فضائی حملےکیے اورشہری آبادیوں پربمباری کی ہے۔

آج صبح کیے گئے حملوں کے اہداف میں فلسطینی سرزمین کےمتعدد فوجی اورحفاظتی اڈےشامل تھے۔ خبر ہے کہ غزہ کےوسط میں 4منزلہ عمارت پربھی بمباری کی گئی۔

گزشتہ روزبھی رہائشی عمارتوں پرحملے کیے گئے تھے جن کے نتیجے میں42 افرادشہید ہوئےتھے۔

خبرایجنسی اے پی کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے عالمی کوششوں کے باوجود غزہ پر کارروائیاں جاری رکھنے کا اشارہ دیا ہے۔

اسرائیلی وزیراعظم نے کہا کہ حملوں پوری قوت کے ساتھ جاری ہیں اور مزید وقت لگے گا، اسرائیل چاہتا ہے کہ غزہ کی حکمران جماعت حماس کو بھارتی قیمت چکانی پڑے۔

source: media reports
content: Sabheen Ammad

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *