اسلامی تعاون تنظیم کا ہنگامی اجلاس، اسرائیل کے خلاف ردعمل

اسلامی تعاون تنظیم کا ہنگامی اجلاس، اسرائیل کے خلاف ردعمل

36 views

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) وزرائے خارجہ اجلاس میں فلسطینیوں پر مظالم کے خلاف قرارداد منظور کرلی گئی۔

غانیہ نورین

 اسلام کے دشمنوں نے ایک بار پھر اپنی بزدلی اور کمزوری کا منہ بولتا ثبوت دے ڈالا، رمضان المبارک میں فلسطینی مسلمانوں کا قبلہ اول مسجد اقصی میں عبادت صہیونی قیادت کی آنکھوں میں کھٹکنے لگی اور عبادت میں مشغول فلسطینی مسلمانوں پر بمباری اور شیلنگ سے اپنی اسلام مخالف سوچ اور فسادی مقاصد اسرائیلی فوج اور قیادت کی حسی کی روداد بیان کررہا ہے۔

مسجد اقصی پر اسرائیلی افواج کا حملہ انکی بزدلی کی داستان بیان کررہا ہے کیونکہ شاید وہ جانتے ہیں کہ فلسطین کے زندہ دل جوانوں کا وہ جنگ میں سامنا نہیں کرسکتے،اس وقت پوری دنیا اسرائیلی فوج اور قیادت سے سوال کرتی نظر آرہی ہے کہ آخر کب تک غزہ پر اسلام کے دشمنوں کا راج رہے گا آخر کب تک نہتے معصوم فلسطینوں کی شہادت پر امت مسلمہ بین کرتی رہے گی۔

 ، غزہ کو ملبے کا ڈھیر بنانے والی صہیونی سازش نے جہاں امت مسلمہ کو ایک ہونے پر مجبور کردیا ہے، شہداء پر بین کرتی فلسطینی مائیں ، شہید والدین کے لیے پکارتے بچوں نے ہر ایک کی آنکھ اشکبار کردی ہے ،وہیں اس وقت ملکی اور غیر ملکی میڈیا کی توجہ کا مرکز فلسطین کی حالت زار پر ہے،  جو امت مسلمہ کی کانپتی ٹانگوں ،عیاش عربوں، مسلم حکمرانوں کے خواب خرگوش میں مبتلا ہونے کی ترجمانی کررہا ہے۔

فلسطینیوں کی آہ و بکا نے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کو بھی ہلا کر رکھ دیا جہاں مسلم ریاست کے حکمران سر جوڑ کر بیٹھنے پر مجبور ہوگئے اتوار کے روز ہونے والی وزرائے خارجہ اجلاس میں فلسطینیوں پر مظالم کے خلاف قرارداد منظور کرلی گئی۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق جلاس کے بعد اسلامی تعاون تنظیم کے سیکرٹری جنرل یوسف بن احمد العثیمین نے بیانات جاری کئے ہیں۔

عثیمین نے بین الاقوامی برادری سے اپنی “اخلاقی، انسانی اور قانونی” ذمہ داریوں کو پورا کرنےکی اپیل کی ہے۔

انہوں نے اسرائیل سے، فلسطینی عوام ، اس کے مقدسات، املاک اور بین الاقوامی قوانین کے تفویض کردہ حقوق پر ،حملوں اور  منظّم خلاف ورزیوں کو بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

عثیمین نے کہا ہے کہ حملوں کے ساتھ ساتھ فلسطینیوں  کے املاک پر قبضہ کرنے، ان سے اپنی زمینوں کو  خالی کرنے کا مطالبہ کرنے کا مطلب ان کے جائز حقوق کا انکار ہے۔ یہ جو کچھ کیا جا رہا ہے امن مرحلے کے لئے کوئی خدمت سرانجام نہیں دے رہا بلکہ اس کے بالکل برعکس مسئلے کے منصفانہ، جامع اور پائیدار حل  تک رسائی کی مخلصانہ کوششوں کے راستے میں رکاوٹ بن رہا ہے۔

See How Much You Know About the Israeli-Palestinian Conflict | Council on Foreign Relations

او آئی سی نے مشرقی القدس میں مکانات سے سیکڑوں فلسطینی خاندانوں کو باہر کرنے خصوصا شیخ جراح  کے حالات بگاڑنے پر تشویش کا اظہار کیا۔

خیال رہے کہ او آئی سی کا ورچول اجلاس وزرائے خارجہ کی سطح پر ہوا جو سعودی عرب کی درخواست پر بلایا گیا تھا۔

فلسطینی وزیر خارجہ

او آئی سی کے اجلاس کے دوران فلسطینی وزیر خارجہ ریاض المالیکی نے کہا کہ اسرائیلی اقدامات عربوں، مسلمانوں اور بین الاقوامی قوائد پر حملہ ہیں۔

فلسطینی عوام اسرائیل کی جانب سے نسلی عصبیت کا نشانہ بنے ہوئے ہیں، ظالمانہ دھماکوں کی وجہ سے غزہ میں دس ہزار سے زائد فلسطینی اپنے گھروں سے نقل مکانی کر چکے ہیں۔ انہوں نے اسرائیل پر معاشی اور سیاسی پابندیاں عائد کرنے کا مطالبہ کیا۔

The fallacy of the colonial 'right to self-defence' | Israel-Palestine conflict | Al Jazeera

پروٹیکشن فورس

او آئی سی کے ہنگامی اجلاس میں ترکی نے فلسطین کے لئے ‘پروٹیکشن فورس’ کی تجویز پیش کی، وزیر خارجہ میلوت کیوسوگلو نے فلسطینی شہریوں کے لئے ایک بین الاقوامی تحفظ کے طریقہ کار پر زور دیا ہے۔

انہوں نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے  سخت مؤقف اپناتے ہوئے کہا کہ مشرقی یروشلم، مغربی کنارے اور غزہ میں حالیہ کشیدگی کا ذمہ دار اسرائیل خود ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ ہفتے ترکی نے اسرائیل کو خبردار کیا تھا جس کو نظر انداز کیا گیا۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی

اجلاس سےخطاب میں پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مطالبہ کیا کہ او آئی سی  فلسطین میں جاری اسرائیلی جارحیت رکوانے کے لیے ہرممکن قدم اٹھائے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ  اسرائیلی فوج نہتے فلسطینیوں کے خلاف جارحیت کر  رہی ہے، اسرائیلی فوج کا نہتے فلسطینیوں پر ظلم انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ غزہ پر اسرائیلی بمباری سے بے گناہ فلسطینی شہید ہو رہے ہیں۔

Escalating the demographic war: The strategic goal of Israeli racism in Palestine – Middle East Monitor

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ فلسطینیوں پر  اسرائیلی جارحیت روکنے کے لیے ہر ممکن قدم اٹھایا جائے اور عالمی برادری فلسطینیوں کے خلاف طاقت کا غیر قانونی استعمال رکوائے، غزہ پر بمباری فوری طور پر رکوائی جائے۔

سعوی وزیرخارجہ

عرب نیوز کے مطابق سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے ہنگامی اجلاس سے خطاب میں کہا کہ اسرائیل فلسطینیوں کی واضح حق تلفی کر رہا ہے، ہم  یروشلم میں اسرائیل کی جانب سے فلسطینیوں کے گھروں پر قبضے کی مذمت کرتے ہیں۔

سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ مشرقی یروشلم فلسطینیوں کی زمین ہے جس کو کسی طرح کا نقصان ہمیں قبول نہیں ہے۔

شہزادہ فیصل نے عالمی برادری سے اسرائیل کی جانب سے کی جانے والی خلاف ورزیوں کے سامنے اپنی ذمہ داریاں نبھانے کو کہا۔

شہزادہ فیصل بن فرحان نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ اسرائیلی خلاف ورزیوں کے خلاف اپنی ذمہ داریاں ادا کریں۔

Israel-Palestine conflict: On the brink of a war? | Hindustan Times

خیال رہے کہ 27 ویں روزے سے مسجد اقصیٰ اور غزہ میں اسرائیلی فوج کی بربریت جاری ہے، ایک ہفتے میں 200 سے زائد شہادتیں سامنے آئی ہیں۔

وزارت صحت کے مطابق ہلاک شدگان میں کم سے کم آٹھ بچے اور دو ڈاکٹرز بھی شامل تھے۔ مجموعی طور پر غزہ میں 197 افراد شہید ہوئے ہیں، جن میں کم سے کم 58 بچے شامل ہیں۔

10 مئی سے اسرائیل کی جانب سے حماس کے خلاف فضائی حملوں کی مہم شروع کرنے کے بعد اب تک 1200 افراد شہید ہوئے ہیں۔

مغربی ممالک کی بھی فلسطین کی حالت زار پر تشویش

فلسطین پر جاری اسرائیلی فوج کی بربریت پر مغربی ممالک نے بھی آواز اٹھا دی، روزانہ کی بنیاد پر فلسطینی بچے ، عورتیں اور نوجوانوں کی شہادت کو فوری طور پر روکنے کا مطالبہ کردیا۔

پوپ فرانسس

کیتھولک مسیحیوں کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس نے  اتوار کے روز اسرائیل اور فلسطین کے درمیان جاری تنازعہ ختم کرنے کا کہا۔ انہوں نے کہا کہ بچوں سمیت معصوم شہریوں کی حالیہ دنوں میں ہونے والی ہلاکتیں ناقابل قبول ہیں۔

پوپ فرانسس نے ہفتہ وار خطاب میں امن کی اپیل کی اور جاری کشیدگی کو ذمہ داری کے ساتھ ختم کرنے اور امن کا راستہ اپنانے کا کہا۔

May be an image of child and standing

جوبائیڈن

امریکی صدر جو بائیڈن نے سنیچر کو اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو اور فلسطینی صدر محمود عباس سے غزہ کی صورتحال پر بات کی تھی۔

امریکی صدر نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کے ساتھ ٹیلی فونک رابطہ غزہ میں اسرائیلی حملوں  کے نتیجے میں ایک عمارت کے تباہ ہونے کے چند گھنٹوں کے بعد کیا تھا۔ اس عمارت میں امریکی نیوز ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس اور دیگر میڈیا اداروں کے دفاتر قائم تھے۔

اسرائیل اور فلسطین کے درمیان حالیہ کشیدگی کے نتیجے میں 47 بچوں سمیت  174 فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ اسرائیل کے مطابق اس کے دس شہری ہلاک ہوئے ہیں جن میں دو بچے بھی شامل ہیں۔

Source:International Media
Content:Ghania

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *