fb1 808x454

کیا فیس بک اسرائیلی بیانیے کو فروغ دے رہا ہے؟

29 views

مقبول ترین سوشل ویب سائٹ فیس بک پر اسرائیلیوں کی حمایت پر بنے پیچ یروشلم پریئر ٹیم کے خلاف پاکستانیوں نے شکایات کے انبار لگا ڈالے ،جس کے بعد فیس بک کو پیج ختم کرنا پڑا۔

غانیہ نورین

پاکستان سمیت دنیا بھر میں میڈیا کو سخت سنسر شپ کا سامنا ہے شاید یہی وجہ ہے کہ ملکی اور عالمی سطح پر ہونے والی تازہ ترین صورتحال کو میڈیا غیرجانبدرانہ طور پر پیش نہیں کرتا جس کے باعث عوام کی بڑی تعداد سوشل میڈیا کا سہارا لیتی ہے۔

مگر موجودہ دور میں سوشل میڈیا کی مقبول ترین ویب سائٹس کا بھی دوہرا معیار سامنے آیا ہے جہاں فیس بک ، ٹوئٹر اور انسٹاگرام جیسے نامی گرامی ویب سائٹ بھی حکومتی حکمران کی کھٹ پتلی دکھائی دیتے ہیں۔

جس کی تازہ ترین مثال مقبوضہ کشمیر میں روز منائی جانے والی خون کی ہولی تو دوسری جانب فلسطین میں جاری اسرائیلی فوج کے ہاتھوں مسلمانوں کی نشل کشی کی دردناک داستانیں، جسے حکومتی اور عالمی طاقتوں کی لگائی گئیں کئی رکاوٹوں کے بعد ہم تک پہنچتی ہے۔

مزید پڑھیں: اسلامی تعاون تنظیم کا ہنگامی اجلاس، اسرائیل کے خلاف ردعمل

حال ہی میں اسرائیل اور فلسطین کے درمیان تنازع شدت اختیار کرگیا ہےجہاں عالمی میڈیا کے حقائق میں شفافیت یقینی نہ ہونے کے سبب صارفین نے سوشل میڈیا کا سہارا لیا ، فلسطین میں جاری صہیونی سازشوں کے حلاف ویڈیوز شیئر کی گئیں تو  غزہ میں ہونے والی نسل کشی کی درد ناک داستانیں سب کے سامنے عیاں ہوگئیں۔

مگر اسرائیلی قیادت کی مسلمانوں کے خلاف بیہودہ سازشیں صرف زمینی سطح تک نہیں تھی، بلکہ صہیونی اتحادیوں نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو بھی مسلمانوں کے خلاف استعمال کرنے کے اقدامات کیے تھے۔

مزید پڑھیں: اسرائیلی مظام: جہادی شیر فلسطین والوں تمہیں فتح مبارک ۔۔

جس کے لیے انہوں نے فیس بک پر ’یروشلم پریئر ٹیم‘ (Jerusalem Prayer Team) نامی ایک پیج بنایا جس کا مقصد ’صیہونی دوستوں (عیسائیوں) کا ایک ایسا گروہ بنانا ہے جس کے ذریعے یہودیوں کی حفاظت کی جا سکے اور یروشلم کے امن کے لیے دعا کی جا سکے۔‘

اس تنظیم کے بانی مائیکل ڈی ایونز ایک عیسائی اور پیشے کے اعتبار سے خود کو مصنف، صحافی اور مذہبی پیشوا (منسٹر) کہتے ہیں۔

اس تنظیم کی ویب سائٹ کے مطابق وہ 10 کروڑ افراد تک اپنے پیغام کو پہنچانا چاہتے ہیں جو کہ ان کا عیسائی عقیدے کے مطابق مذہبی فرض ہے۔

یہ پیج 14 جنوری، 2010 کو بنایا گیا تھا کہ اور اسے چلانے والوں میں سے 13 افراد امریکہ جب کہ 2 افراد اسرائیل میں رہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: مان نہ مان میں تیرا مہمان ،اسرائیل کی حمایت پر بھی بھارت نظرانداز

تنظیم کا دفتر امریکی شہر فینیکس میں ہے۔ پیج کی کور فوٹو پر اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نتن یاہو کی تصویر موجود ہے۔

اس پیچ کے حوالے سے چوکادینے والی بات یہ تھیں کہ اس پیچ کو پاکستانی صارفین کی بڑی تعداد نے لائک کر رکھا تھا مگر کئی پاکستانی صارفین شکایت کا کہنا ہے کہ انہوں نے اس پیج کو لائیک نہیں کیا لیکن پھر بھی ان کے پروفائل سے یہ پیج لائیک ہوا نظر آ رہا ہے۔

کچھ صارفین کا الزام تھا کہ فیس بک جان بوجھ کر اس پیج کو لائیکس دے رہا ہے، مگر فیس بک پر پاکستانی کی پیچ پر لاتعداد رپورٹ کے بعد اب اس پیج کو ڈیلیٹ کر دیا گیا ہے۔

یہ واضح نہیں کہ اس پیج کو خود فیس بک نے ہٹایا یا اس کے مالکان نے خود اسے بند کر دیا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی انسٹاگرام اور ٹوئٹر پر مقبوضہ بیت المقدس سے فلسطینیوں کے ممکنہ انخلا کے بارے میں پوسٹوں کو حذف کردیا گیا تھا تاہم انسٹاگرام اور ٹوئٹر نے بھی وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ اکاؤنٹس کو ہمارے خود کار سسٹم نے غلطی سے معطل کیا اور اس مسئلے کو حل کر دیا گیا ہے جبکہ مواد کو بھی دوبارہ بحال کیا جا چکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: فلسطین کی مدد کے لیے فیصل ایدھی کا بڑا اقدام،امدادی ٹیمیں بھیجنے کا فیصلہ۔۔

ایک طرف سوشل میڈیا ویب سائٹس کو جھوٹ یا انتہا پسندی پھیلانے کا مہرہ کہا جارہا ہے تو دوسری جانب سوشل میڈیا سائٹس کی عالمی طاقتوں کے ساتھ جگل بندی بھی سب کے سامنے عیاں ہے، اس بات میں کوئی شک نہیں کہ سوشل میڈیا بھی پرنٹ و الیکڑونک میڈیا کی طرح اپنی غیرجانبدار اہمیت کھوچکا ہے۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *