shoaib akhter 808x454

شعیب اختر قومی ٹیم کی پرفارمنس سے ناخوش،محمدرضوان پر بھی برہم

39 views

جنوبی افریقہ اور زمبابوے کے ساتھ کرکٹ سیریز میں قومی ٹیم کی شاندار پرفارمنس بھی سابق کھلاڑی شعیب اختر کو متاثر نہ کرسکی، سابق بولر پاکستانی کرکٹ ٹیم پر ایک بار پھربرس پڑے۔

غانیہ نورین

قومی ٹیم کے سابق کھلاڑی شعیب اختر کا شمار دنیا کے ان فاسٹ بولرز سے ہوتا ہے جو نا صرف اپنی تیز ترین اسپیل کرتی گیند سے سامنے والے کو کلینڈ بولڈ کردیتے ہیں بلکہ اپنی بے باک انداز گفتگو سے بھی کئی لوگوں کو پویلین کی راہ دکھادیتے ہیں۔

شاید یہی وجہ ہے کہ وہ اکثر اپنے متنازع بیان کی وجہ سے خبروں کی شہ سرخیوں میں دکھائی دیتے ہیں۔ حال ہی وہ ایک بار پھر لوگوں کی توجہ حاصل کرنے میں کامیاب دکھائی دیئے ہیں۔

مزید پڑھیں: فرانسیسی صدر کے اسلام مخالف بیان پر شعیب اختر بھی برہم

جہاں وہ قومی ٹیم کی جنوبی افریقہ اور زمبابوے کے ساتھ کرکٹ سیریز میں شاندار پرفارمنس کے باوجود ناراض دکھائی دیئے جبکہ پاکستانی ٹیم کے وکٹ کیپر محمد رضوان کو بھی آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے گلے شکوے کر ڈالے۔

ایک انٹرویو میں سابق پیسر نے کہاکہ ایک سیریز جاری تھی اس لیے تنقید کرنا مناسب نہیں سمجھا، ہم قومی ٹیم کو اس لیے سپورٹ کرتے ہیں کہ مینجمنٹ درست فیصلے کرسکے،اب سیریز ختم ہوگئی تو میں یہ چیخ چیخ کرکہہ رہا ہوں کہ اس انداز کی کرکٹ مت کھیلو،یہ قابل قبول نہیں ہے، اگر اسی طرح کی سوچ کے ساتھ کھیلتے رہے تو ناکام ہونا شروع ہوجاؤگے، آپ کو اندازہ ہی نہیں کہ محمد رضوان کے حوالے سے کیا کرنا ہے،وکٹ کیپر بیٹسمین کو خود بھی سوچنا چاہیے۔

مزید پڑھیں: سابق فاسٹ بالر شعیب اختر نے بھارتیوں کو آڑے ہاتھوں لے لیا

انہوں نے کہا کہ یہ کسی کے چچا کی ٹیم نہیں ہے کہ ہر فارمیٹ میں اننگز کا آغاز کرنے کا موقع مل جائے، ہر طرز کی کرکٹ میں دیے جانے والے کردار سے انصاف کرنا ہوگا،جب تک آپ جیت رہے ہیں کوئی بات نہیں کرے گا کہ کون کہاں سے آرہا ہے، ہر کھلاڑی کو ٹیم کی ضرورت اور جدید کرکٹ کے تقاضوں کے مطابق پرفارم کرنا ہوگا،اگر کوئی ایسا نہیں کرتا تو باہر جانے کا راستہ کھلا ہے، ایسے کسی پلیئرکے ساتھ بدسلوکی کرنے کی ضرورت نہیں بس اسے منتخب نہ کریں۔

یہ بھی پڑھیں: پی ایس ایل 6 کا ترانہ میں اس سے اچھا گا لیتا شعیب اختر کی تنقید۔۔

سابق پیسر نے کہا کہ پی سی بی کو کھلاڑیوں کی پسماندہ سوچ کا نوٹس لینا چاہیے،وہ اپنے انداز کو لے کر آگے بڑھ رہے ہیں،مینجمنٹ کو اس حوالے سے ایک واضح پیغام دینا چاہیے،انھیں آگاہ کرنا چاہیے کہ کس برانڈ کی کرکٹ کھیلنے کی ضرورت ہے،ٹیسٹ کرکٹ میں کس رن ریٹ کے ساتھ کھیلنا، کپتان اور ٹیم کوکیا کرنا ہے،ٹیلنٹ کا انتخاب اور اس کو درست کردار دینا دونوں یکساں اہمیت کے حامل ہیں۔

Source:Express News
Content : Ghania Naureen

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *