whatsapp 808x454

نئی پرائیویسی پالیسی: واٹس ایپ بھی یوٹرن لے لیا؟؟

146 views

دنیا کی مقبول ترین میسجنگ موبائل ایپ واٹس ایپ کی انتظامیہ نے یوٹرن لیتے ہوئے کہا ہے کہ نئی پرائیویسی پالیسی قبول نہ کرنے والوں کی فیچر تک رسائی محدود نہیں کی جائے گی۔

غانیہ نورین

سال 2021 کے آغاز پر واٹس ایپ انتظامیہ نے اپنے  صارفین کو نئی پرائیویسی پالیسی سے متعلق آگاہ کیا تھا کہ فروری 2021 سے وہ اپنی پرائیویسی پالیسی کو تبدیل کر رہے ہیں جس کے تحت صارفین کے ڈیٹا پر کمپنی کا اختیار بڑھ جائے گا۔

انتظامیہ کی جانب سے نئے پرائیویسی پالیسی سامنے آنے پر صارفین نے شدید ردعمل کااظہار کیا تھا جبکہ کئی صارفین نے واٹس ایپ کے بجائے متبادل ایپلیکیشنز ٹیلی گرام اور سنگر پر اپنے اکاؤنٹ بھی بنالیے تھے۔

اس کے علاوہ کئی ممالک نے بھی واٹس ایپ اور فیس بک انتظامیہ کو شدید تنقید کیا تھا جبکہ نئی پرائیویسی کے خلاف کمپنی کو تنبیہ کرتے ہوئے سخت اقدامات اٹھانے کی وارننگ بھی دی جس پر فیس بک انتظامیہ نے وضاحتی پیغام جاری کیا تھا۔

مزید پڑھیں: پرائیویسی پالیسی پر تنقید کے بعد واٹس ایپ اسٹیٹس اپ ڈیٹ کرنے پر مجبور

تاہم رواں سال کے درمیان فیس بک کے زیرملکیت واٹس ایپ نے اپنی نئی پرائیویسی سے یوٹرن لے لیا ہے، جس کے مطابق پالیسی تسلیم نہ کرنے والے افراد کی فیچرز تک رسائی محدود نہیں کی جائے گی۔

قبل ازیں واٹس ایپ نے واضح کیا تھا کہ وہ صارفین جو ہماری پالیسی تسلیم نہیں کرتے انہیں ایپلکیشن پر محدود کردیا جائے گا مختلف اور نئے فیچرز تک رسائی بھی نہیں دی جائے گی لیکن اب انتظامیہ کا کہنا ہے کہ کم از کم کچھ عرصے تک ایسے صارفین کے ساتھ کچھ بھی نہیں کیا جائے گا۔

واٹس ایپ کا اپنے نئے بیان میں کہنا ہے کہ حکومتوں اور پرائیویسی ماہرین سے مشاورت کے بعد ہم نے طے کیا ہے کہ پالیسی قبول نہ کرنے والے صارفین کی فیچرز تک رسائی محدود نہیں کریں گے۔

کمپنی نے بتایا کہ فی الحال ہمارا ایسا کوئی منصوبہ نہیں ہے، تاہم ہماری جانب سے صارفین کو گاہے بگاہے نئی اپ ڈیٹ کے بارے میں یاد دلایا جائے گا۔

مزید پڑھیے: نئی پرائیویسی پالیسی: واٹس ایپ کے بانی نے وضاحت دےدی

خیال رہے کہ واٹس ایپ نے رواں سال 4 جنوری کو اپنی نئی پالیسی کا اعلان کیا جس کے بعد صارفین نے پرائیویسی کی بنیاد پر تحفظات کا اظہار کیا اور اس طرح ایپلیکشن کی نئی پالیسی متنازع بن گئی، تاہم انتظامیہ نے وقتاً فوقتاً وضاحتی بیانات کا سلسلہ جاری رکھا اور صارفین کو آمادہ کرنے کی بھی کوششیں کیں۔

واٹس ایپ کی متنازع پالیسی کا نفاذ 15 مئی سے ہوا ہے۔ واٹس ایپ کی پرائیویسی متنازع بننے کے بعد ٹلی گرام اور سنگل ایپس کے ڈاؤن لوڈنگ کی شرح میں ریکارڈ اضافہ بھی دیکھا گیا۔ بہرکیف صارفین کی تمام تر مخالفت اور تحفظات کے باوجود بالاخرواٹس ایپ نے پالیسی کو دنیا بھر میں موجود صارفین پر لاگو کیا۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *