12 7 808x454

الہ دین پارک اور پویلین اینڈ کلب ایک ہفتے میں مکمل مسمار کرنے کا حکم

210 views

سپریم کورٹ نے ایک ہفتے میں میں الہ دین پارک کی دکانیں اور پویلین اینڈ کلب گرانے کا حکم دیا ہے۔ سپریم کورٹ نے الہ دین پارک کسی کو بھی ٹھیکے پردینے پر پابندی لگا دی ہے۔

ترتیب و تدوین: صبحین عماد

تفصیلات کے مطابق بدھ کو سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں الہ دین پارک شاپنگ ایریا اور پویلین اینڈ کلب سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ ایڈمنسٹریٹر کےایم سی نے عدالت کو بتایا کہ الہ دین شاپنگ ایریا اور پویلین اینڈ کلب گرانے کے لیے کارروائی شروع کردی ہے اور اس میں 10 سے 12 روز درکار ہیں۔

چیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عدالت اتنے دن نہیں دے گی اورعمارتیں گرانے کے لیے صرف سوراخ نہ کریں بلکہ پورا کام کریں۔ سپریم کورٹ نے 4 دن میں یہ آپریشن مکمل کرنے کا حکم دیا اور کہا کہ جو مشینری درکار ہو وہ استعمال کریں اور دن رات کام کریں۔عدالت نے تجاوزات کے خلاف کارروائی کی رپورٹ 1 ہفتے میں پیش کرنے کا حکم بھی دیا۔

الہ دین پارک انتظامیہ کے وکیل ایڈوکیٹ فیصل صدیقی نے عدالت سے درخواست کی کہ لیز دکانوں کے مالکان کو سامان نکالنے کی اجازت دے دیں۔اس پرچیف جسٹس نے استفسار کیا کہ پارک کی دکانوں کو بھی لیزکردیا گیا؟ آپ اتنے ذمہ دار وکیل ہیں اور ایسی باتیں کررہے ہیں۔

وکیل نےعدالت کو بتایا کہ ہائی کورٹ کے حکم پر آفیشل اسائنی کی نگرانی میں نیلامی ہورہی ہے۔ چیف جسٹس نے حکم دیا کہ کسی نجی کمپنی کو نہیں دیا جائے گا۔ سپریم کورٹ نے الہ دین پارک کسی کو بھی ٹھیکے پر دینے پر پابندی لگا دی اور کے ایم سی کو خود پارک چلانے کی ہدایت کی۔

انتظامیہ کے وکیل نے کہا کہ ہمیں رضاکارانہ طور پر دکانیں خالی کرنے کی اجازت دے دیں۔ کےایم سی کو بھی 25 فیصد ادائیگی کی گئی ہے۔اس پر چیف جسٹس نےریمارکس دئیے کہ یہی تو مسئلہ ہے کہ سب مل بانٹ کرکھارہے ہیں۔ کسی پرائیویٹ کمپنی کومداخلت نہیں کرنے دیں گے۔

خیال رہے کہ پیر 14جون کو سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں تجاوزات سے متعلق کیسز میں چیف جسٹس گلزار احمد نے الہ دین پارک سے متصل پویلین اینڈ کلب کو غیر قانونی قرار دیا۔عدالت نے ریمارکس دیے کہ غیر قانونی طور پر زمین کو کنورٹ کرکے کمرشل کردیا گیا، لہٰذا پولیس اور رینجرز کی مدد سے فوری کارروائی کی جائے۔

واضح رہے کہ منگل کو تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پویلین اینڈ کلب اور شاپنگ ایریا غیرقانونی ہے اس لیے الہ دین پارک کو فوری اصل شکل میں بحال کیا جائے۔

فیصلے میں کہا گیا کہ غیر قانونی تعمیرات مسمار کرکے ملبہ فوری ہٹایا جائے جبکہ ایڈمسنٹریٹر کے ایم سی اور کمشنر کراچی 2روز میں کارروائی مکمل کریں۔

source: Sama news

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *