joker1 808x454

جوکر نامی وائرس کا دنیا بھر کے کمپیوٹر پر حملہ

114 views

اینڈرائیڈ موبائل کے بعد جوکر نامی وائرس کمپیوٹر سے بھی ڈیٹا چوری کرنے لگا، کئی لوگ نجی معلومات کیساتھ ساتھ اپنی جمع پونجی سے بھی محروم ہوگئے۔

غانیہ نورین

اینڈرائیڈ موبائل اور کمپیوٹر صارفین کے موادچوری کرنے والے یہ ہیکرز واردات کیلئے نت نئے طریقے اور حربے اختیار کرتے ہیں ، کبھی کسی لنک کی مدد سے ، تو کبھی کسی ایپ کی مدد سے صارفین کے ڈیٹا تک رسائی حاصل کرتے ہیں اور صارف کو اس کی معلومات سے محروم کردیتے ہیں۔

اس مرتبہ ان ہیکرز نے ہالی ووڈ فلم کی مشہورو معروف فلم جوکر کا انتخاب کیا ہے جس کی مدد سے وہ صارف کے کمپیوٹر پر حملہ آور ہوکر اس کے ڈیٹا تک رسائی حاصل کرتے ہیں۔

مزید پڑھیں: ڈیٹا ہیکنگ: اپنا فیس بک اکاؤنٹ کس طرح محفوظ کریں؟؟؟

تفصیلات کے مطابق جوکر نامی وائرس دنیا بھر کے کمپیوٹرز پر ایک مرتبہ پھر حملے کے لئے تیار ہے، یہ وائرس جنگل کی آگ کی طرح کمپیوٹر سسٹمز میں پھیل رہا ہے۔

Eight Android apps test positive for Joker malware - YouTube

بھارتی پولیس نے نوجوانوں کو متنبہ کیا ہے کہ وہ جوکر سے ہوشیار رہیں کیوں کہ اس وائرس کے ذریعے فون اور کمپیوٹرز سے ڈیٹا، فون نمبر، تصاویر اور دیگر اہم تفصیلات کے چوری کی جاسکتی ہیں۔

معلومات چوری کرنے والا وائرس مال ویئر جوکر کی تصاویر والی خصوصی ایپس کی صورت میں گوگل پلے اسٹور پر موجود ہے۔

جوکر ایپس ڈاؤن لوڈ کرنے والے بھارت صارفین کا کہنا ہے کہ ایپ کے ڈاون لوڈ کرنے سے ان کو بڑے پیمانے پر مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے، ان کے بینک اکاونٹ کے ذریعہ ان کی جمع رقم کا چند منٹوں میں صفایا کردیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: خبردار! میسجز اور ای میلز سے آپکا اکاؤنٹ ہیک ہوسکتا ہے

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ جوکر مال ویر 2017 میں منظرعام پر آیا تھا جس کے بعد گوگل نے 2020 میں جوکر مال ویئر کی 11 ایپس اور رواں سال اب تک 22 ایپس کو ہٹا دیا ہے، تقریبا ایک سال بعد یہ وائرس دوبارہ حملے کےلیے تیار ہے اور سائبر کرائم میں ملوث افراد نے اب جوکر کے نام سے ملیشین مال ویر ( وائرس ) متعارف کروایا گیا ہے۔

List Of 11 Joker Malware Infected Apps Removed From Google Play Store -  Technoratan

جوکر کے خطرے سے نوجوانوں کو آگاہ کرتے ہوئے بھارتی پولیس نے نوجوانوں کو مشورہ دیا کہ وہ جوکر سے ہوشیار رہیں کیونکہ گزشتہ تین ماہ کے دوران سائبر فراڈ کے کیسز میں کئی گناہ اضافہ ہوا ہے جس کے باعث متعدد افراد اپنی جمع پونجی سے محروم ہوچکے ہیں۔

پولیس نے مشورہ دیا کہ انٹرنیٹ کا استعمال کرنے والے کسی بھی مشتبہ لنک یا اجنبی افراد کی جانب سے بھیجے گئے پیغام پر کلک نہ کریں کیوں کہ جوکر کو کلک کرتے ہی فون کا سارا ڈیٹا، بینک کی تفصیلات اور نجی تصاویر تک سائبر کرائم میں ملوث افراد کی آسانی سے رسائی ہوسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کیا آپ کو پتا ہے؟؟ آپ کا فون نمبر کوئی اور بھی استعمال کررہا ہے؟

Source:ARY News
Content:Ghania Naureen

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *