narendra modi 808x454

کورونا ،کرپشن یا پھر کچھ اور مودی سرکار کی کابینہ میں بڑی تبدیلیاں

94 views

بھارتی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق مودی کابینہ میں بڑے پیمانے پر اکھاڑ پچھاڑ کی گئیں ہیں. 12 وزرا کے مستعفی ہونے کے بعد اب بعد 36 نئے وزرا اور وزرائے مملکت کابینہ میں شامل ہوگئے ہیں۔ اس نئے اضافے کے بعد بھارتی کابینہ اب 77 وزرا پرمشتمل ہوگئی ہے۔

فہمیدہ یوسفی

بھارت کی اہم ترین ریاست میں الیکشن سر پر تو دوسری جانب کورونا کی بدترین صورتحال اور معیثت کی گرتی ہوئی ساکھ نے مودی سرکار کو ہلاکر رکھ دیا ہے کورونا سے بھارت میں بڑھتی اموات ہسپتالوں میں بستروں کا انتظام نہ ہونا آکسیجن کی فراہمی میں ناکامی اور جان بچانے والی ادویات کی عدم دستیابی کی وجہ سے سابقہ وزیر صحت رمیش پوکھریال نشانک کی کارکردگی پر ہر طرف سے سوال اٹھ رہے تھے اور ہر طرف سے ان پر شدید تنقید کی جارہی تھی جبکہ ان پر استعفی کے لیے بھی شدید دباؤ تھا۔

مزید پڑھیں: مودی سرکار کا مقبوضہ کشمیر میں نیا تماشہ کیا ہے؟؟

مستعفی ہونے والے قانون و انصاف اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے وزیر روی شنکر پرساد گذشتہ کچھ مہینوں کے دوران غیر ملکی سوشل میڈیا کمپنیوں کے ساتھ تنازعات میں ملوث تھے ۔ اس صورتحال میں ان کے استعفی کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔

مستعفی ہونے والےوزرا میں  صحت رمیش پوکھریال نشانک قانون و انصاف اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے وزیر روی شنکر پرساد جبکہ وزیر برائے ماحولیات پرکاش جاوڈیکر کے علاوہ وزیر برائے انفارمیشن و براڈ کاسٹنگ اور وزیر برائے ہیوی انڈسٹریز بھی شامل ہیں

تاہم بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ریاستی انتخابات سے پہلے روی شنکر پرساد کو حکومتی جماعت بھارتیا جنتا پارٹی میں اہم عہدہ دیے جانے کا امکان ظاہر کیا گیا تھا

حیران کن طور پر مستعفی ہونے والے پرکاش جاوڈیکر کا بطور حکومتی ترجمان بھی اہم کردار تھا جو وہ گزشتہ کئی برسوں سے نبھا رہے تھے۔

پرکاش جاوڈیکر کی طرح تجربہ کار سیاستدان روی شنکر پرساد کا شمار ان چند وزرا میں ہوتا ہے جو بی جے پی کے سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی کی کابینہ کا حصہ بھی رہ چکے ہیں۔

جبکہ بھارتی میڈیا رپورٹس ا س حقیقت کی تصدیق کررہے ہیں کہ کابینہ میں تبدیلی کا فیصلہ دو بڑی وجوہات کے باعث کیا گیا ہے پہلی وجہ کورونا کی صورتحال کو سنبھالنے میں ناکامی جبکہ دوسری وجہ معیشت کی تیزی سے بگڑتی صورتحال ہے

یہ بھی پڑھیں: پلوامہ کے بعد مودی سرکار کا ایک اور ڈرامہ فلوپ

نئی کابینہ میں امیت شاہ کو وزارت نیو کارپوریشن جبکہ مانسوکھ منڈاویوا کو وزارت صحت کا قلمدان سونپا گیا ہے۔

اس کے علاوہ وزارتِ سائنس اینڈ ٹیکنا لوجی بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے پاس ہی ہوگی۔

اب دیکھنا یہ ہے کہ تبدیلیاں مودی سرکار کی گرتی ساکھ کو سہارا دینے میں کامیاب ہونگی یا نہیں ۔ فی الحال تو کورونا کرپشن اور اندرونی بٖغاوتوں نے مودی سرکار کے ہوش اڑا رکھے ہیں ۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *