بارش کے بعد مٹی کی سوندھی خوشبو انسان کے من کو کیوں بھاتی ہے؟؟

بارش کے بعد مٹی کی سوندھی خوشبو انسان کے من کو کیوں بھاتی ہے؟؟

23 views

محسن بھوپالی نے کیا خوب کہا ہے:

روک سکو تو پہلی بارش کی بوندوں کو روکو تم
کچی مٹی تو مہکے گی ہے مٹی کی مجبوری

غانیہ نورین

ملک بھر میں مون سون بارشوں کا آغاز ہوگیا جس کے ساتھ ہی اداس چہرے خوشی سے کھل چکے ہیں ، سرسبز باغات ، درخت اور پودے جھوم اٹھے ہیں جبکہ ننھے ننھے بچوں کی خوشیاں بھی دوگنی ہوگئی ہے۔

مگر بارش کی پہلی بوند پڑتے ہی ماحول میں مٹی کی سوندھی سوندھی خوشبو بھی مہک اٹھتی ہے جو دل و دماغ کو تازگی پہنچاتا اور یوں محسوس ہوتا ہے جیسے ماحول میں قدرت نے فرحت اور پرسکون والا پرفیوم چھڑک دیا ہے۔

Why Do I Love The Smell Of Rain? - Simplemost

لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ مٹی کی یہ حسین خوشبو کیوں آتی ہے اور اس کو کیا کہا جاتا ہے؟

بارش کے بعد جو ایک مزے کی ہلکی ہلکی بھینی خوشبو آتی ہے، اسے پیٹری کور (Petrichor) کہتے ہیں۔جو اصل میں خشک زمین پر موجود ایک بیکٹیریا کی وجہ سے ہوتا ہے جس کا نام Actinomycetes ہے اور جب اس خشک زمین پر بارش کی پہلی بوند پڑتی ہے تو یہ بیکٹیریا اس کے قطروں پہ عمل کر ایک کیمیکل بناتا ہے جسے Geosmin کہتے ہیں، اس کیمیکل کا فارمولا C12H22O ہے۔

Gambar

اور جب یہ کیمیکل ہماری ناک میں پہنچتا ہے تو دماغ کو بہت اچھا لگتا ہے اور یہ خوشبو ایک دم موڈ خوش کر دیتی ہے۔

یوں سمجھ لیں رب تعالیٰ نے انسان کا موڈ خوشگوار کرنے کے لیے اس ننھی مخلوق کو یہ کام سونپ رکھا ہے۔ اس خوشبو کو Fruit Fly بھی محسوس کرتی ہے۔

اور تم اپنے رب کی کون کونسی نعمتوں کو جھٹلاؤ گے.(سورہ رحمان)

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *