تاشقند : وزیراعظم عمران خان کا بھارتی صحافی کو کرارا جواب

تاشقند : وزیراعظم عمران خان کا بھارتی صحافی کو کرارا جواب

47 views

تاشقند میں وزیراعظم عمران خان نے ناصرف بھارتی صحافی کو کرارا جواب دیا بلکہ بھارتی وزیرخارجہ سے ہاتھ نہ ملاکر بھارت کو یہ باور کروایا کہ پاکستان دشمن کی ہر چال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔

غانیہ نورین

 راوا نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے بھارتی صحافی کے سوال پر منہ توڑ جواب دیتے ہوئے کہا کہ بھارت کو کب سے کہہ رہے ہیں کہ مہذب ہمسائے بن کر رہیں، لیکن کیا کریں، آر ایس ایس کی آئیڈیالوجی راستے میں آگئی ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے تاشقند انٹرنیشنل کانفرنس میں ایک خود مختار اور مضبوط کردار کے حکم پاکستان کے طور پر ابھریں انہوں نے نا صرف پاکستان پر جھوٹے الزامات لگانے والوں کو دو ٹوک جواب دیا جبکہ امن کے دشمنوں کو باور کروایا کہ پاکستان ہر سازش پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔

مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور افغانستان میں بھارتی سرگرمیاں بے نقاب ہونے پر وزیراعظم عمران خان اور وزیر خارجہ نے بھارتی وزیر خارجہ سے ہاتھ نہیں ملایا

مزید پڑھیں: وزیراعظم عمران خان کی تقریر ، اس سے پہلے نہ سنی گئی نہ دیکھی گئی

راوا نیوز کے مطابق تاشقند میں انٹرنیشنل کانفرنس ،جنوبی ایشیا وسطی ایشیا کا باضابطہ افتتاح ہوچکا ہے، کانفرنس کے افتتاح پر شرکا کا گروپ فوٹو سیشن بھی ہوا، اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے فرداًفرداً سربراہان،وزرائےخارجہ سےہاتھ ملایا تاہم وزیراعظم عمر نےبھارتی وزیر خارجہ جےشنکر سےہاتھ نہیں ملایا ، اسی طرح کا ردعمل وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھی دیا۔

جے شنکر کیساتھ کھڑے روسی وزیرخارجہ سے وزیراعظم عمران خان نے غیر رسمی گفتگو بھی کی۔

وزیراعظم عمران خان نے وسطی وجنوبی ایشیائی رابطہ کانفرنس سے خطاب  کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور بھارت مسئلہ کشمیر حل کرلیں تو پورا خطہ بدل جائے گا،وسط ایشیا کے درمیان رابطہ کاری ہوگی، بدقسمتی سے تنازعات حل نہ ہونے سے ہم بہت بڑی صلاحیت کو استعمال نہیں کرپارہے۔

مزید پڑھیں: وزیراعظم عمران خان ایک بار پھرعوام کے دل جیتنے میں کامیاب

انہوں نے کانفرنس سے خطاب میں سی پیک کو بی آر آئی کا فلیگ پروجیکٹ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے سے خطے میں نہ صرف تجارتی روابط کو بڑھایا جا سکے گا بلکہ علاقائی تعاون کو بھی مزید فروغ ملے گا۔ خطے میں ایک دوسرے سے بہتر تعلقات کے لیے گوادر کو توانائی، تجارتی اور لاجسٹک مرکز کے طور پر ترقی دے رہے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ خطے کی امن وسلامتی سب سے اہم ہے ، ہماری ترجیح افغانستان میں امن ہے ، افغانستان میں خراب حالات سے سب سے زیادہ پاکستان متاثر ہوتا ہے، پاکستان نےدہشت گردی کیخلاف70ہزارسےزائدقربانیاں دیں۔

افغان امن کے حوالے سے انھوں نے کہا کہ طالبان کومذاکرات کی میز پر لانے کیلئے پاکستان سےزیادہ کسی نے کردار ادا نہیں کیا ، پاکستان نے طالبان کومذاکرات کی میز پرلانےکیلئےہرممکن کوشش کی، مجھے مایوسی ہوتی ہے کہ پاکستان پر الزام لگائے جاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ہم بھوکے عوام پر مکمل لاک ڈاؤن نہیں کرسکتے:وزیراعظم عمران خان

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جب امریکا کے سب سے زیادہ فوجی تھے تومذاکرات کی پیشکش کرنی چاہیےتھی، اب طالبان کیو ں امریکا کی بات مانیں گے جب فوجیوں کاانخلا ہورہاہے، اسلحہ کے زور پر افغان مسئلے کا کوئی حل نہیں۔

Source:Media Reports

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *