islamabad rain 808x454

اسلام آباد میں بادل پھٹ گئے، سڑکیں تالاب بن گئیں

150 views

اسلام آباد میں کلاؤڈ برست کے بعد مختلف علاقوں میں سیلاب آگیا، نیشبی علاقے زیرآب آگئے ، پارکنگ میں کھڑی گاڑیاں سیلابی ریلے میں بہہ گئیں،پاک فوج کے اہلکار بھی ریسکیو کے لیے جڑواں شہر پہنچ گئے ہیں۔

غانیہ نورین

شہراقتدار میں مون سون بارشوں نے تباہی مچارکھی ہے، بادل پھٹنے کے بعد شہر بھر میں سیلاب کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے، مواصلاتی نظام جام ہوگیا جبکہ معمولات زندگی بھی درہم برہم ہوگئی۔

نجی ٹی وی چینل کے مطابق وفاقی دارلحکومت میں شدید بارش کے بعد سیلابی صورتحال پیدا ہوگئی۔ شہریوں کو غیر ضروری نقل و حرکت سے روک دیا گیا۔

Image

راولپنڈی اور اسلام آباد کے مختلف علاقوں میں رات سے اب تک 122 ملی میٹر تک بارش ریکارڈ کی گئی، موسلادھار بارش سے نالہ لئی میں پانی کی سطح میں اضافہ ہوگیا۔

نالہ لئی میں کٹاریاں کے مقام پر پانی کی سطح 21 فٹ تک بلند ہوگئی، جس کے بعد الرٹ جاری کر دیا گیا،نالہ لئی میں کٹاریاں کے مقام پر پانی کی سطح 14 فٹ تک پہنچ گئی۔

Image

صورتحال سے نمٹنے کے لیے پاک فوج اور دیگر اداروں کو طلب کر لیا گیا ہے، آئی ایس پی آرنے کہا کہ شدید بارش سے نالہ لئی چڑھ گیا ہے اورای الیون میں بھی پانی جمع ہوگیا ہے۔

فوجی دستے بحالی و امدادی کارروائیوں میں سول انتظامیہ کی مدد میں مصروف ہیں جبکہ سیلاب کی صورتحال سے نمٹنے کے لئے ہنگامی پلان بنا لیا گیا ہے۔

ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات کا کہنا ہے کہ اسلام آباد کے مختلف علاقوں میں سیلابی صورت حال پیدا ہے، شہری کچھ گھنٹوں کے لئے غیر ضروری نقل و حرکت نہ کریں۔

ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے کہا کہ مختلف علاقوں میں گھروں، پلازوں کی بیسمنٹس میں پانی بھر چکا ہے، لوگ اپنے طور پر پانی نکالنے کی کوشش سے اجتناب کریں، صورتحال کو بہتر کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، کچھ علاقوں میں صورتحال کافی بہتر کرلی ہے۔

انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ راول ڈیم کے سپل ویز (دروازے) کھولے جارہے ہیں۔ دریائے کورنگ اور دریائے سواں کے لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ آج کے دن دریا کے کناروں سے دور رہیں۔ مساجد میں اعلانات بھی کروائے گئے ہیں ۔ دریا میں نہانے پر دفعہ 144 نافذ ہے- ریسکیو اور انتظامیہ کی ٹیم موجود ہیں۔

Source: Media Reports
Content:Ghania Naureen

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *