2 14 808x454

ساجد سدپارہ نے بغیر آکسیجن کے “کےٹو” سر کرکے اعزاز حاصل کرلیا ۔۔

52 views

دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی مہم سر کرنے کے دوران جاں بحق ہونے والے پاکستانی کوہ پیما علی سدپارہ کے صاحبزادے ساجد سدپارہ نے بغیر آکسیجن کے ٹو کی چوٹی سر کرکے اعزاز حاصل کرلیا۔

صبحین عماد

کہتے ہیں شوق کا کوئی مول نہیں ہوتا اور شوق جب جنون بن جائے تو اس کو روکنا ناممکن ہوجاتا ہے اور جب جنون کی بات ہو تو ایک نام کیسے بھول سکتے ہیں ایک ایسا ہی جنونی اور پہاڑوں کے عشق میں گرفتار علی سد پارہ اور اس کا بیٹا جنہیں پہاڑوں کے عشق نے اپنے ہی حصار میں باندھ رکھا ہے اور اسی جنوننے آج ساجد سدپارہ کو یہ اعزاز بخشا ہے کے ساجد نے دوسری بار دنیا کی بلند ترین چوٹی کے ٹو کو سر کرلیا۔

 یہ پڑھیں: پہاڑوں کی آغوش میں رہنے والے علی سدپارہ کی واپسی

ساجد سدپارہ کے ہمراہ کینیڈین فوٹو گرافر اور  فلم میکر  ایلیا سیکلی اور  نیپال کے پسنگ کاجی شرپا نے بھی کے ٹو کو سر کیا ہے۔

تینوں کوہِ پیماؤں نے آج صبح 7 بج کر 45 منٹ پر کے ٹو کو سر کرنے کا اعزاز حاصل کیا، ساجد سدپارہ نے دوسری بار کے ٹو سر کیا ہے۔

 مزید پڑھیں : علی سدپارہ اب پہاڑوں سے کبھی واپس نہیں آئیں گے۔۔

خیال رہے کہ ساجد سدپارہ اپنے والد علی سدپارہ اور ان کے ساتھیوں کی لاشوں کی تلاش اور انہیں واپس لانے کے مقصد سے دوبارہ کے ٹو پر پہنچے ہیں۔

ساجد سدپارہ نے اپنے والد کو کےٹو کی برف میں ہی محفوظ کردیا ہے پہاڑوں کےعاشق کی داستان پہاڑون کی آغوش میں ہی تمام ہوگئی ہے

source:Hum News

content: Sabheen Ammad

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *