pegasus spy 808x454

پیگاسس کے ذریعے دنیا بھر میں جاسوسی،پاک فوج کی بروقت کارروائی

94 views

جاسوسی کے اسپائے ویئر پیگاسس کی واٹس ایپ کی جانب سے مبینہ طور پر مدد کرنے کے بیان سے متعلق پی ٹی اے کی وضاحت سامنے آگئی۔

ترتیب و تدوین :غانیہ نورین

پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے ) کے ایک افسر کے قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع کے اجلاس میں دیے گئے بیان کو سیاق و سباق سے ہٹ کر پیش کیا گیا۔

ترجمان پی ٹی اے کے مطابق اتھارٹی کے نمائندے نے کمیٹی کو بتایا کہ سائبر سیکیورٹی پالیسی تشکیل اور منظور کی جاچکی ہے جو ملکی سائبر اسپیس کو نقصان پہنچانے کی کوششوں سے نمٹنے میں مددگار ہوگی۔

ترجمان کے مطابق کمیٹی کے اجلاس کے دوران ممبران کے سوالات پر انہوں نے بتایا کہ پیگاسس جیسے سافٹ وئیر ایک مخصوص طریقے کے ذریعے ہیکرز کو تمام کمیونیکیشن کاپی کرنا شروع کردیتے ہیں۔

پی ٹی اے ترجمان کے مطابق اجلاس میں انہوں نے یہ بھی بتایا تھا کہ واٹس ایپ اور کچھ دیگر ایپس کی انکرپٹڈ کمیونیکیشن کو توڑنا ممکن نہیں۔

ترجمان نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ پی ٹی اے نمائندے نے اجلاس کے دوران یہ نہیں کہا کہ واٹس ایپ نے پیگاسس کے فون ہیک کرنے میں مرکزی کردار ادا کیا۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز برطانوی اخبار کی ایک رپورٹ نے حیران کن انکشاف کیا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کے پرانے نمبر کو ہیک کرنے کی کوشش کی گئی تھی، جس وقت نمبر ہیک کرنے کی کوشش کی گئی اس وقت عمران خان وزیراعظم نہیں تھے۔

مزید پڑھیں:  وزیراعظم عمران خان کے نمبر کو ہیک کرنے کی کوشش

فون میں پیگاسس وائرس کی تصدیق کیسے کریں؟

دنیا بھر میں مختلف شخصیات کی جاسوسی کیلئے اسرائیلی سافٹ ویئر پیگاسس کے استعمال کے حوالے سے سامنے آنے والے حالیہ انکشافات کے بعد ماہرین نے وہ طریقہ بتایا ہے جس سے یہ معلوم کیا جا سکتا ہے کہ آپ کے سمارٹ فون میں پیگاسس سافٹ ویئر ہے یا نہیں۔

غیر ملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق، سائبر سیکورٹی کے ماہر ڈیوڈ بیلابان نے اپنے آرٹیکل میں لکھا ہے کہ معروف اینٹی وائرس سافٹ ویئر پیگاسس سافٹ ویئر کو تلاش نہیں کر سکتے کیونکہ یہ پروگرام کسی بھی فون میں موجود آپریٹنگ سسٹم کی بنیادی معلومات میں چھیڑ چھاڑ کر کے انہیں خراب کر دیتا ہے۔ ہیومن رائٹس کی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ایک سافٹ ویئر تیار کیا ہے جس کا کام پیگاسس تلاش کرنا ہے۔

اس سافٹ ویئر کا نام ایم وی ٹی (موبائل ویری فکیشن ٹوُل کٹ) ہے اور اس کا سورس کوڈ GitHub پر موجود ہے۔

مزید پڑھیں: بل گیٹس ، اوبامہ سمیت معروف ترین شخصیات کے اکاؤنٹ ہیک

یہ سافٹ ویئر اینڈروئیڈ اور ایپل آئی او ایس دونوں کیلئے دستیاب ہے تاہم، یہ سافٹ ویئر کسی مخصوص ڈیوائس کیلئے نہیں ہے، لینکس یا پھر میک او ایس کے ذریعے اسے کسی مخصوص ڈیوائس کیلئے تیار کرکے اس میں انسٹال کیا جا سکتا ہے۔

یہ سافٹ ویئر فون کا ڈیٹا کمپیوٹر میں کاپی کرکے تمام اشیاء کا تجزیہ کرتا ہے اور معلوم کرتا ہے کہ آیا ڈیوائس میں پیگاسس ہے یا نہیں۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *