2 17 808x454

لندن میں بیٹھے نواز شریف کی لاہور میں ویکسینیشن کیسے ہوگئی؟

50 views

لندن میں موجود سابق وزیراعظم نواز شریف کو لا ہور میں کورونا  ویکسین لگادی گئی مگر کیسے اور کیوں۔

صبحین عماد

سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کے شناختی کارڈ پر گزشتہ روز ویکسی نیشن کا اندراج کیا گیا۔ ویکسی نیشن کا جعلی اندراج نادرا کے ویب پورٹل پر بھی اپ لوڈ ہے جبکہ اس کے بعد سے کئی سوالات نے بھی جنم لے لیا ہے کہ اتنی بڑیکوتاہی کیسے اور کس سے ہوئی ۔

ریکارڈ کے مطابق  نواز شریف کو چینی ویکسین سائنو ویک لگائی گئی ہے۔ انہیں ویکسین کی دوسری خوراک ابھی لگنا باقی ہے۔

مریم نواز کا ردعمل

دوسری جانب اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مر یم نواز نے کہاکہ سابق وزیراعظم نواز شریف کی کورونا ویکسین کے جعلی سرٹیفکیٹ کی خبرمضحکہ خیزاورباعث تشویش ہے۔

عظمیٰ بخاری کی حکومت پر تنقید

مسلم لیگ ن پنجاب کی ترجمان عظمیٰ بخاری نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو کورونا ویکسینیشن لگانے پر رد عمل دیتے ہوئے کہاکہ اس حکومت کا ہمیشہ کی طرح آج ایک اور لطیفہ سامنے آیا ہے، میاں نواز شریف کو لاہور کے کوٹ خواجہ سعید ہسپتال میں ویکسین لگا دی گئی ہے۔

عظمیٰ بخاری نے کہاکہ جس کا ریکارڈ موجود ہے اور این سی او سی کے پاس اندراج بھی کر دیا گیا یے، اس سے بڑی ناکامی اور نااہلی اس حکومت کی کیا ہو سکتی ہے، سوال یہ ہے کہ میاں صاحب کا آئی ڈی کارڈ بلاک ہے تو انٹری کیسے ہو گئی۔

حکومت کا تحقیقات کے لیے ایف آئی اے سے رجوع

مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف کے نام پر جعلی کورونا ویکسینیشن سے متعلق خبروں کے بعد حکومت پنجاب کے محکمہ صحت نے تحقیقات اور قانونی کارروائی کے لیے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) سائبر کرائم سے رجوع کرلیا۔

محکمہ صحت کی جانب سے جاری مراسلے میں ایف آئی اے سائبر کرائم کے ڈپٹی ڈائریکٹر کو مخاطب کرکے کہا گیا کہ وہ محمد نواز شریف کے نام پر کورونا ویکسین کی جعلی انٹری کرنے والے کے خلاف تحقیقات کریں۔

مراسلے میں جیو نیوز، اے آر وائی نیوز، دنیا نیوز، سٹی 24، جی این این نیوز اور لاہور نیوز کی رپورٹس کا حوالہ دیا گیا کہ مذکورہ اور دیگر چینلز پر نواز شریف کے نام پر جعلی کورونا ویکسین لگائے جانے سے متعلق خبریں نشر ہوئی ہیں۔

محکمہ صحت نے ایف آئی اے کو بتایا کہ سابق وزیر اعظم کے نام پر کورونا ویکسین کی جعلی انٹری گورنمٹ کوٹ خواجہ سعید ہسپتال سے ہوئی ہے

تحقیقات کی رپورٹ سامنے آگئی

نوازشریف کےنام پرویکسین کی جعلی انٹری کے معاملے کی تحقیقات کرنے والی ٹیم نے رپورٹ تیار کرکے وزیر اعلیٰ پنجاب کو ارسال کر دی ہے۔

انکوائری کمیٹی نے7 افراد کوغلط اندار ج پر ذمہ دار قرار دےدیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ویکسی نیشن سینٹرمیں تعینات عملہ غیرتربیت یافتہ تھا۔ کوٹ خواجہ سعید اسپتال کے ویکسی نیشن سینٹر سے متعدد اندراج کینسل کیےجانے کا انکشاف بھی ہوا ہے۔

واقعے میں زیادہ غفلت ایم ایس کی تھی، ریکارڈ چیکنگ کے دوران تضادات پائےگئے۔ ایم ایس، سینئرافسر، کلرک، نرس، وارڈ بوائے، چوکیدار اور پی اے کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

واضح رہےکہ لندن بیٹھے ن لیگ کے قائد نواز شریف کو لاہور میں کورونا ویکسین لگی ہے، این سی او سی کے ریکارڈ میں نواز شریف کو 22 ستمبر کو ویکسین لگائی گئی۔

وزیر جیل خانہ جات و ترجمان پنجاب حکومت فیاض الحسن چوہان نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہ اکہ آج ایک فراڈیے نے اپنے سے بڑے فراڈیے کا شناختی کارڈ استعمال کر کے ویکسی نیشن کروائی ، اب پتہ نہیں اس میں مریم صفدر بھی شامل ہوں۔

source: media reports
content: sabheen ammad

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *