6 808x454

آف اسپنر ساجد خان : آخر کون ہے یہ گدڑی کا لعل ؟

298 views

بنگلہ  دیش  کے  خلاف  ٹیسٹ  سیریز  میں  پاکستانی  ٹیم  نے  حیران  کن  پرفارمنس  کا  مظاہرہ  کرتے  ہوئے  سیریز  کو  کلین  سویپ  کر  لیا  ہے۔ تین  دن  بارش  کی  نظر  ہوجانے  کے  باوجود  بھی  پاکستانی  باؤلرز  نے بنگلہ  دیش  کے  بلے  بازوں  کو  ایسے  دبوچا  کہ  کوئی  ایک  بلے  باز  بھی  کریز  پر  ٹک  نہ  سکا  اور  بنگلہ  دیش  اپنے  ہی  ہوم  گراؤنڈ  پر  فالو  آن  کا  شکار  ہو  گیا۔

حرا  خالد

پاکستان نے ڈھاکہ میں کھیلے گئے دوسرے ٹیسٹ میچ میں ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور بارش سے متاثرہ میچ میں اپنی پہلی اننگز 300رنز چار کھلاڑی آؤٹ پر ڈکلیئر کردی تھی۔

میچ کے ابتدائی تین دن بارش کے سبب صرف 67.2 اوورز کا کھیل ممکن ہو سکا جس کے بعد میچ ڈرا کی جانب گامزن تھا لیآف اسپنر نے 8 وکٹیں لے کر بنگلہ دیشی بیٹنگ لائن کی کمر توڑ دی اور میزبان ٹیم پہلی اننگز میں 87رنز پر ڈھیرہو کر فالوآن کا شکار ہو گئی۔

بنگلہ دیش نے دوسری اننگز کا آغاز کیا تو حسن علی اور شاہین شاہ آفریدی کی جوڑی نے بنگلہ دیشی صفوں میں کھلبلی مچا دی اور ابتدائی 4 بلے باز 25 کے مجموعی اسکور پر پویلین لوٹ چکے تھے۔

اس کے بعد مشفیق الرحیم اور لٹن داس نے ٹیم کو سہارا دیا اور محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے ٹیم کا اسکور 98 رنز تک پہنچایا۔

اس موقع پر لٹن داس کی اننگز اختتام کو پہنچی اور وہ 45 رنز بنانے کے بعد ساجد خان کا شکار بنے۔

بنگلہ دیش کی پوری ٹیم دوسری اننگز میں 205 بنا کر آؤٹ ہوگئی اور پاکستان نے میچ میں اننگز اور 8رنز سے فتح اپنے نام کر لی۔

ساجد خان نے دوسری اننگز میں 4 اور میچ میں مجموعی طور پر 12 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا، شاہین شاہ آفریدی اور حسن علی نے 2، 2 جبکہ بابر اعظم نے ایک وکٹ حاصل کی۔

شاندار باؤلنگ پر ساجد کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا جبکہ عابد علی سیریز کے بہترین کھلاڑی قرار پائے۔

ساجد خان نے اننگز کا اختتام 42 رنز کے عوض آٹھ وکٹوں کی غیر معمولی کارکردگی پر کیا۔ یہ ٹیسٹ کرکٹ میں بنگلہ دیش کے خلاف کسی بھی پاکستانی بولر کی بہترین انفرادی بولنگ ہے۔ اس سے پہلے 2002 میں دانش کنیریا نے 77رنز دے کر سات وکٹیں حاصل کی تھیں۔

ساجد خان بہترین انفرادی کارکردگی کے لحاظ سے عبدالقادر، سرفراز نواز اور یاسر شاہ کے بعد چوتھے نمبر پر آ گئے ہیں۔

اس  میچ  میں  حیرت  انگیز  فتح  کے  ساتھ  پاکستانی  ٹیم  نے  کئی  عالمی  ریکارڈ  بھی  بنا  لیے  ہیں۔

پاکستان کی ٹیم ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں میچ کے پانچویں دن 13 وکٹیں لے کر میچ میں فتح حاصل کرنے والی دنیا کی پہلی ٹیم بن گئی ہے، اس سے قبل کوئی بھی ٹیم یہ کارنامہ انجام نہیں دے سکی۔

ساجد خان نے میچ میں 42 رنز کے عوض 8 وکٹیں لیں جو 19سال میں کسی آف اسپنر کا بہترین باؤلنگ کا ریکارڈ ہے، اس سے قبل متیاہ مرلی دھرن نے 2002 میں زمبابوے کے خلاف 51 رنز دے کر 9 وکٹیں لی تھیں۔

یہ ٹیسٹ کرکٹ میں محض دوسرا موقع ہے کہ کسی ٹیم نے میچ کے چوتھے اور پانچویں دن اپنی تمام 20 وکٹیں گنوائی ہوں۔

اس سے قبل بھی ایسا بنگلہ دیش ہی کے ساتھ ہوا تھا جب 2001 میں ویلنگٹن کے مقام پر نیوزی لینڈ نے چوتھے اور پانچویں دن ان کی تمام 20 وکٹیں حاصل کر لی تھیں۔

آخر  ساجد  خان  ہیں  کون؟

انتیس  سالہ  ساجد خان کا تعلق پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا سے ہے جبکہ انہوں نے اپنا ڈیبیو ٹیسٹ میچ زمبابوے کے خلاف 29 اپریل 2021 کو کھیلا۔  بنگلہ  دیش  کے  خلاف  یہ  ساجد  خان  کے  کیرئیر  کا  چوتھا  میچ  تھا۔  ساجد خان نے اپنے ٹیسٹ کیریئر میں اب تک 14 وکٹیں حاصل کی ہیں اور بیٹنگ میں انہیں صرف 3 اننگز میں موقع ملا جس میں انہوں نے 32 رنز اسکور کیے۔

کرکٹ انفو کے مطابق ساجد خان ڈومسٹک میچز میں اب تک 63 میچز کھیل چکے ہیں جس میں انہوں نے 172 وکٹیں حاصل کی ہیں جبکہ وہ ڈومسٹک کرکٹ میں 1 ہزار 318 رنز بھی اسکور کرچکے ہیں۔

اس سے قبل 26 نومبر سے کھیلے گئے چٹاگانگ ٹیسٹ میں ساجد خان نے 4 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا۔

ساجد خان اس سے قبل خیبر پختونخوا اور پشاور کی ٹیموں کی جانب سے بھی کھیل چکے ہیں جس میں ان کی کارکردگی کافی متاثر کن رہی جس کے باعث انہیں قومی ٹیم میں کھیلنے کا موقع ملا۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *