8 808x454

پروفیسر حفیظ شائقین کرکٹ اور پاکستان آپ کو یاد رکھیں گے

41 views

دنیائے کرکٹ میں پروفیسر کے نام سے مشہور پاکستان کے مایہ ناز آل راؤنڈر  سابق کپتان محمد حفیظ نے  بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لینے کا اعلان کردیا ہے

فہمیدہ  یوسفی

اپنے 18 سال پر مشتمل کرکٹ کیرئیر کا آغاز محمد حفیظ نے  3 اپریل 2003 کو زمبابوے کے میچ کے خلاف کیا تھا ۔

جبکہ محمد حفیظ نے  آخری بار 11 نومبر 2021 کو آئی سی سی مینز ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں آسٹریلیا کے خلاف پاکستان کی نمائندگی کی تھی۔

اپنے 18 سالہ طویل کرکٹ کیرئیر  میں محمد حفیظ نے  392 انٹرنیشنل میچز میں 12780 رنز اسکور کرنے کے ساتھ ساتھ 253 وکٹیں بھی حاصل کیں۔انہوں نے 32 انٹرنیشنل میچز میں پاکستان کی قیادت بھی کی۔

وہ آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی 2017 کی فاتح قومی ٹیم کا حصہ تھے. انہوں نے پچاس اوورز پر مشتمل 3 اور ٹی ٹونٹی فارمیٹ پر مشتمل 6 ورلڈ کپ میں پاکستان کی نمائندگی کی۔ اس دوران انہوں نے 3 آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں بھی حصہ لیا۔

محمد حفیظ کی پریس کانفرنس

 محمد حفیظ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ

وہ آج فخر کے ساتھ انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج وہ جس مقام پر ہیں اس کا انہوں نے کبھی تصور بھی نہیں کیا تھا، یہ سب کرکٹ کی وجہ سے لہٰذا اس پر وہ اپنے تمام ساتھی کرکٹرز، کپتانوں، اسپورٹ اسٹاف اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے شکر گزار ہیں، جنہوں نے ان کے 18 سالہ انٹرنیشنل کرکٹ کیریئر میں ان کی مدد کی۔

محمد حفیظ نے مزید کہا کہ وہ اپنے اہلخانہ کے بھی مشکور ہیں، جنہوں نے عالمی سطح پر ان کے پاکستان کی نمائندگی کا خواب پورا کرنے کے لیے بڑی قربانیاں دیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ 18 سال پاکستان کے سبز رنگ کی کٹ زیب تن کرنے پر خوش قسمت اور فخر محسوس کرتے ہیں۔

محمد حفیظ نے کہا کہ اس کیرئیر میں انہیں کئی اتار چڑھاؤ کا سامنا کرنا پڑا مگر اس دوران انہیں اپنے دور کے بہترین کھلاڑیوں کے ساتھ کھیلنے کا اعزاز حاصل ہوا۔

رمیز راجہ، چیئرمین پی سی بی کا حفیظ کو خراج تحسین

چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ محمد حفیظ نے بھرپور انداز سے کرکٹ کھیلی، انہوں نے انٹرنیشنل کرکٹ میں ایک طویل کیریئر بنانے کے لیے انتھک محنت کی۔

چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ  وقت کے ساتھ ساتھ محمد حفیظ کی کرکٹ بہتر سے بہترین ہوتی گئی۔

انہوں نے مزید کہا کہ محمد حفیظ نے فخر کے ساتھ سبز بلیزر پہنا ہے جس کے لیے پی سی بی ان کا مشکور ہے۔ وہ ان کے مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہیں اور پاکستان کرکٹ میں ان کی شاندار شراکت کے لیے ایک بار پھر ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔

محمد حفیظ کی جانب سے ریٹائرمنٹ کے اعلان کے بعد سوشل میڈیا پر شائقین  کرکٹ نے ان کے فیصلے پر اپنا اپنا اظہار خیال کیا

محمد حفیظ  کے کیرئیر کے دوران اتار چڑھاؤ

محمد حفیظ کرکٹ کے ان ستاروں میں شمار ہوتے ہیں جنہوں  نے عروج و زوال کو بہت قریب سے دیکھا ان کے اپنے زیادہ تر ان سے ناراض ہی دکھائی دیے  جبکہ ان کو  تینوں فارمیٹس میں پاکستانی ٹیم کی قیادت کا اعزاز بھی حاصل رہا

حفیظ  آئی سی سی کی ون ڈے بولنگ اور آل راؤنڈر رینکنگ میں پہلے نمبر پر بھی رہے جبکہ آئی سی سی کی ٹی ٹوئنٹی آل راؤنڈر رینکنگ میں بھی پہلی پوزیشن پر رہے

یہی نہیں محمد حفیظ آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی جیتنے والی پاکستانی اسکواڈ میں شامل تھے  ۔

انھوں نے تین ورلڈ کپ اور چھ ٹی ٹوئنٹی عالمی کپ میں بھی پاکستان کی نمائندگی کی۔

محمد حفیظ کو اپنے کریئر میں ایک سے زائد بار اپنے بولنگ ایکشن کی وجہ سے مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور اس کی درستگی کے لیے آئی سی سی کی منظور شدہ بائیو مکینک لیب کا رخ کرنا پڑا۔

محمد حفیظ اپنے کریئر میں ایک ایسے کھلاڑی کے طور پر مشہور رہے جو کرکٹ اسٹیبلشمنٹ کے پسندیدہ نہیں سمجھے جاتے تھے

 کبھی مصباح الحق اور اظہر علی کے ساتھ وزیراعظم عمران خان سے ان کی ملاقات پاکستان کرکٹ بورڈ کو پسند نہیں آئی

تو کبھی  پی سی بی کے موجودہ چیئرمین رمیز راجہ کے  ساتھ الجھتے نظر آئے  یاد رہے کہ رمیز راجہ نے اپنے یوٹیوب چینل پر محمد حفیظ اور شعیب ملک کا نام لے کر کہا تھا کہ یہ دونوں اڑتیس سال کے ہو جانے کے باوجود ابھی تک کھیل رہے ہیں حالانکہ ان دونوں نے اپنی بہترین کرکٹ کھیل لی ہے۔

محمد حفیظ نے اس پر پلٹ کر  رمیز راجہ کو طنزیہ جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ ’میرے بیٹے کی کرکٹ کی سمجھ رمیز راجہ سے زیادہ ہے۔‘

جبکہ پچھلے سال ٹی ٹین لیگ میں شرکت کے معاملے پر بھی پاکستان کرکٹ بورڈ اور محمد حفیظ کے درمیان اختلافات  کھل کر سامنے آئے تھے۔

محمد حفیظ کو جب سری لنکا کے خلاف سیریز میں ڈراپ کیا گیا تھا تو انھوں نے سلیکٹرز سے اس کی وجہ معلوم کی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر سینیئر کھلاڑیوں کے بارے میں کرکٹ بورڈ کی کوئی پالیسی ہے تو اس پر بات ہونی چاہیے دراصل بہتر رابطہ بہت ضروری ہے۔

 جبکہ محمد حفیظ اور سابق کپتان سرفراز احمد کے درمیان ٹوئٹر پر گرما گرمی  بھی سوشل میڈیا صارفین کی توجہ کا  مرکز بنی رہی تھی

حفیظ نے اپنے ٹویٹ میں لکھا تھا ’رضوان کو ٹی ٹوئنٹی میں سنچری کرنے پر مبارکباد، تم ایک چمکتا ستارہ ہو لیکن مجھے کئی مرتبہ خیال آتا ہے کہ تمہیں کب تک یہ ثابت کرنا پڑے گا کہ تم پاکستان کے لیے تمام فارمیٹس میں نمبر ون وکٹ کیپر بیٹسمین ہو؟ جسٹ آسکنگ (صرف پوچھ رہا ہوں)۔‘

محمد حفیظ کی اس ٹویٹ کو سرفراز احمد  نے اپنے دل پر لے لیا تھا  اور ان کی جانب  سے کہا گیا تھا کہ

سرفراز نے اپنی ٹویٹ میں لکھا: ’محمد حفیظ صاحب پاکستان کے لیے کھیلنے والے سارے ہی وکٹ کیپرز نمبر ون ہیں اور قابلِ احترام بھی۔ چاہے وہ وسیم باری ہوں یا تسلیم عارف، امتیاز احمد ہوں یا سلیم یوسف، راشد لطیف ہوں معین خان ہوں یا کامران اکمل۔ یا آج کل رضوان۔

محمد حفیظ کی ریٹائرمنٹ کا فیصلہ غیرمتوقع نہیں تھا اور نئے کھلاڑیوں کی آمد کے ساتھ یہ امید کی جارہی تھی کہ ان کی اور شعیب ملک کی جانب سے ریٹائرمنٹ کا علان کردیا جائیگا

تاہم  پاکستان کرکٹ ٹیم کے’پروفیسر‘ کو دنیائے کرکٹ کے شائقین اور پاکستان ہمیشہ یاد رکھے گا۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *