13 808x454

میں نے اور زارا نے اپنی پہلی اولاد کو کھو دیا ، میں نے خود اپنا بچہ قبر میں اتارا : اسد صدیقی

596 views

ہنستے  کھلکھلاتے  چہرے  اپنے  اندر  کیا  کیا  غم  سموئے  بیٹھے  ہیں  اسکا  اندازہ  تب  ہی  ہوتا  ہے  جب  اگلے  فرد  کی  کہانی  پتہ  چلے۔  کون  کہہ  سکتا  ہے  کہ زارا  نور  عباسی  جیسی شوخ  و  چنچل  اداکارہ  اولاد  کے  چھن  جانے  کا  دکھ  دل  میں  سموئے  بیٹھی  ہیں۔

حرا  خالد

اولاد  کو  کھو  دینے  کا  دکھ  والدین  کے  لئے  قیامت  ہوتا  ہے  اور  اسکا  اندازہ  بھی  صرف  وہی  کر  سکتے  ہیں  جو  اس  دکھ  سے  گزرے  ہوں۔ ہر  زبان  پر  یہی  دعا  ہوتی  ہے  کہ  خدا  اس  دکھ  سے  ہر  والدین  کو  بچا  کر  رکھے۔

شوبز  کی  مشہور  و  معروف  جوڑی  زارا  نور  عباسی  اور  اسد  صدیقی  نے  بھی  اپنے  پہلے  بیٹے  کو  کھو  دیا  ہے۔ معروف اداکار اسد صدیقی نے گزشتہ دنوں ایک ویب شو میں  اس  مشکل  گھڑی  کا  ذکر  کرتے  ہوئے انکشاف کیا کہ ان کے ہاں بچے کی  پیدائش قبل از وقت ہوئی تھی جو کچھ عرصے  بعد انتقال کر  گیا  تھا۔

اسد  صدیقی  نے  بتایا  کہ  کچھ عرصہ قبل ان کے ہاں بچے کی ولادت ہوئی لیکن بچہ جلد ہی فوت ہوگیا۔اسد صدیقی کا کہنا تھا کہ ہمارا بچہ ضائع(مس کیرج) نہیں ہوا تھا بلکہ اہلیہ زارا نور نے ایک بیٹے کو جنم دیا تھا جس کا نام ہم نے اورنگزیب رکھا تھا۔

اسد نے بتایا کہ بچے کی قبل از وقت پانچویں یا چھٹے مہینے میں پیدائش ہوگئی تھی، شروع میں سب بہتر لگ رہا تھا لیکن بعد میں کچھ پیچیدگیاں ہوتی گئیں اور ہم نے اپنا بچہ کھو دیا جس کو میں نے خود اپنے ہاتھوں سے سپردخاک کیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ وقت ہمارے لیے کافی تکلیف دہ تھا لیکن ہم نے اللہ کی مرضی جان کر اس پر صبر کیا، کیونکہ جب آپ یہ جانتے ہیں کہ اوپر کوئی ذات ہے جو آپ کے معاملات دیکھ رہا ہے اور وہ آپ کو اس سے بہتر عطا کرے گا جو آپ سے لیا گیا ہے ۔

اداکار نے یہ بھی بتایا کہ اس سانحہ کے بعد زارا کی حالت بھی کافی خراب ہوگئی تھی، مجھے لگتا ہے کہ یہ چیز مرد سے زیادہ عورت کو متاثر کرتی ہے۔ اللہ تعالیٰ نے ایسے ہی عورت کو اتنا بڑا مقام نہیں دیا۔

واضح رہے کہ زارا نور عباس اور اسد صدیقی کی شادی 2017 میں ہوئی تھی  اور  یہ  انکی  پہلی  اولاد  تھی۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *