6 20 808x454

پاکستان ریلوے ڈیجیٹل سفر پر ہے

41 views

 گوگل پاورڈ اسکریپ یارڈ مینجمنٹ سسٹم اور پروڈکٹیویٹی اور کولابریشن کا نفاذ۔

ٹیکنالوجی اور ریلوے کو ایک ساتھ لانے کے وژن کے ساتھ، پاکستان ریلویز اور گوگل نے گوگل ٹیکنالوجیز سے چلنے والے اور ٹیک ویلی پاکستان کے ذریعے نافذ کردہ جدید ترین اسکریپ یارڈ مینجمنٹ سسٹم کو لاگو کر کے اسکریپ یارڈ مینجمنٹ میں موزوں انقلاب لانے کے لیے ایک دوسرے کا ساتھ دےگا۔  مینجمنٹ سسٹم کو فی الحال ریلوے کیرج فیکٹری، اسلام آباد میں ابتدائئ تجرباتی طور پر لاگو کیا جا رہا ہے جسے بعد میں قومی سطح تک بڑھایا جائے گا۔

وفاقی وزیر ریلویز محمد اعظم خان سواتی نے گوگل پروڈکٹیویٹی اور کولیبریشن موزوں کے ساتھ سکریپ یارڈ مینجمنٹ سسٹم کا افتتاح کیا۔  اس موقع پر وزارت ریلوے کے سینئر حکام اور سی ای او ٹیک ویلی مسٹر عمر فاروق اپنی ٹیم کے ہمراہ موجود تھے۔  گوگل کے نمائندے بھی گوگل میٹ کے ذریعے آن لائن ایونٹ میں شامل ہوئے۔

افتتاحی تقریب کے دوران وفاقی وزیر ریلوے نے بتایا کہ پاکستان ریلویز کا سالانہ اسکریپ کو ٹھکانے لگانے کا ہدف 2 ارب روپے ہے جسے قومی خزانے میں جمع کیا جاتا ہے۔  کافی عرصے سے تانبے کے اسکریپ کو ٹھکانے نہیں لگایا گیا ہے، حال ہی میں وہی سکریپ گورنمنٹ ٹو گورنمنٹ (G2G) کی بنیاد پر M/S POF کو دیا گیا تھا اور پچھلے دو مہینوں میں ریلوے کو ایک ارب روپے موصول ہوئے تھے۔

کلاؤڈ بیسڈ اسکریپ یارڈ مینجمنٹ سسٹم پاکستان ریلویز کے اسکریپ یارڈ اثاثوں کو ڈیجیٹائز کرے گا، اسکریپ یارڈ انوینٹری کے انتظام کو ہموار کرے گا اور پاکستان ریلوے کے سکریپ مینجمنٹ کے عمل میں شفافیت لائے گا۔

اسکریپ یارڈ مینجمنٹ سسٹم کے ساتھ ساتھ تعاون اور موزوں پیداواری کا افتتاح بھی وفاقی وزیر ریلوے نے کیا۔  یہ موزوں ریلوے ملازمین کو جدید ترین ڈیجیٹل ٹولز کا استعمال کرتے ہوئے مختلف ٹیموں کے ساتھ تعاون کرنے کا ایک مؤثر طریقہ فراہم کرے گا۔  یہ دور سے کام کرتے ہوئے یا دور دراز مقامات سے بات چیت کرتے ہوئے پیداواری صلاحیت کو یقینی بنانے میں بھی مدد کرے گا۔

اس موقع پر عمر فاروق، سی ای او ٹیک ویلی نے کہا، “ڈیجیٹل پاکستان کے وزیر اعظم کے وژن کے تحت، اسکریپ یارڈ کے انتظام کو ڈیجیٹائز کرنا اور گوگل ورک اسپیس کی تعیناتی پاکستان ریلوے اور موجودہ حکومت کو بڑے پیمانے پر ڈیجیٹل کرنے کے لیے آنے والے بہت سے آنے والے اقدامات میں سے ایک ہے۔”

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر ریلوے نے گوگل، ٹیک ویلی ٹیم اور ریلوے کے افسران بالخصوص پروجیکٹ لیڈ سعد اللہ زاہد کی کاوشوں کو سراہا، جو اسکریپ یارڈ مینجمنٹ سسٹم کی ترقی اور عمل درآمد کے عمل میں شامل تھے۔

انہوں نے مزید کہا، “آئی ٹی پر مبنی نظام ہی واحد طریقہ ہے جس سے اس طرح کے عمل کو ہموار کیا جا سکتا ہے اور سرکاری اداروں میں شفافیت لائی جا سکتی ہے”۔  وزیر نے دیگر تکنیکی اقدامات کے بارے میں بھی تفصیلات شیئر کیں جو اس وقت ریلوے میں تعینات ہیں جن میں RABTA، کمپلینٹ مینجمنٹ سسٹم، چہرے کی شناخت، ای ٹکٹنگ اور ای پروکیورمنٹ شامل ہیں۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *