9 12 808x454

راوا ڈاکومینٹری فلمز  کے بینر تلے بننے والی فلم “جھور”کا ٹریلر ریلیز

53 views

راوا ڈاکیومینٹری فلمز  کے بینر تلے  ڈاکیومینٹری فلم “جھور”1971 کی جنگ کا ٹریلر ریلیز کر دیا گیا  ہے۔

“جھور”  فروری 2022 میں اپنے آفیشل یوٹیوب چینل راوا ڈاکیومینٹری  پر  ریلیز ہوگی۔

عینی شاہدین، مصنفین، سیاست دانوں، دفاعی تجزیہ کاروں کے خصوصی انٹرویوز اور نادر آرکائیو فوٹیجز کے ذریعے “جھور” میں  سقو ط  ڈھاکہ  کے  عوامل کا جائزہ لیا  گیا ہے  اور ا س سانحے  کی حقیقی وجوہات  اور کچھ ان کہی داستانوں کا سراغ لگایا گیا ہے ساتھ ہی یہ   ڈاکیومینٹری  ان تمام وجوہات کا ادراک کرتی ہے  جن  کی وجہ سے   مشرقی پاکستان بنگلہ دیش کی ایک آزاد ریاست  کے  طور پر تشکیل ہوا۔

اس ڈاکیومینٹری میں  بالخصوص ان عوامل  جن کو  بھارتی سرپرستی اور حمایت حاصل تھی کا احاطہ کیا گیا ہے۔    یہ ڈاکیومینٹری فلم 1971 کی جنگ کے واقعات کی حقیقی تصویر اور غیر جانبدارانہ تجزیہ فراہم کرنے کے لیے حقائق پر بنائی گئی ہے   جبکہ یہ ڈاکیومینٹری اس وقت کے ہونے والے واقعات کا مکمل  بیانیہ اور حالات  کا تجزیہ بھی فراہم کرتی ہے ۔ ’’ہمارے پاس اتنے وسائل یا افرادی قوت نہیں تھی کہ مشرقی پاکستان میں بھارت پر حملہ کر سکیں۔ہمارے پاس واحد انتخاب تھا کہ آخری آدمی کی آخری گولی تک دفاع کیا جائے۔ ” کیپٹن شیرجان تاجک، ستارہ جرات ریٹائرڈ  نے اس ڈاکیومینٹری فلم میں1971  کی جنگ کے بارے میں  اپنے انٹرویو کے دوران بتایا

سقوط ڈھاکہ  کے دوران  ہونے والے سانحات جن میں نہ صرف  عام شہری بلکہ فوجی اہلکار وں کی شہادتیں ہوئیں  دل دہلا دینے والے ہیں، اور انہی لرزہ خیز سانحات کا  یہ ڈاکیومینٹری  فلم  مکمل احاطہ کرتی نظر آئیگی سقوط ڈھاکہ کے  ایک عینی شاہد کے مطابق وردی پوش سپاہی پرسرار ڈوبے حالات میں مارے جاتے ۔ وہ نہ ہی  واپس آیا  اور نہ ہی اس کی لاش کہیں سے ملی۔ ’’ان کی لاشیں دیوار کے ساتھ ڈھیر تھیں۔‘‘ ایک اور عینی شاہد  کے مطابق، فوج محدود وسائل کے باوجود بہادری سے لڑی۔ “فوجیوں کے پاس بندوق تھی لیکن فائر کرنے کے لیے گولیاں نہیں تھیں،”

اس میں کوئی شک نہیں کہ ملک کے سب سے بڑے سانحات میں شامل سقوط ڈھاکہ کو  اس لیے بھی زندہ رکھا گیا ہے  تاکہ  پاکستان اور بنگلہ دیش کے تعلقات میں بہتری نہ آسکے ۔ جبکہ  تلخ  حقیقت یہ  بھی ہے کہ ہر سال پاکستان کے سلامتی کے دشمن پاکستان کے سلامتی اداروں کے خلاف پروپیگینڈا کرکے اس  اس سانحے کو زندہ کرتے ہیں تاکہ بنگلہ دیش میں پاکستان کے لیے نفرت زندہ رہے  اس ڈاکیومینٹری  فلم  کا مقصد نہ صرف بنگلہ دیش کے ساتھ تعلقات کو بہتر اور مضبوط بنانا ہے جبکہ ماضی میں ہونے والی مغربی پاکستان کی کچھ غلطیوں کو تسلیم کرنا بھی ہے ۔

جبکہ اس ڈاکیومینٹری کے ذریعے  پاکستان کے خلاف عالمی سیاست کی حقیقت کو پہچاننے کی ایک کوشش بھی کی گئی ہے اس ڈاکیومینٹری فلم میں پاکستان کی سرزمین پر رچی  جانے والی مکروہ  بین الاقوامی سیاسی سازشوں کا پردہ فاش کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ جبکہ مشرقی پاکستان کی علیحدگی کا باعث بننے والے واقعات کے سلسلے کا غیر جانبدارانہ  اور حقیقت پسندانہ تجزیہ پیش کیا گیا ہے

سانحہ مشرقی پاکستان کا گرینڈ پلان اور اس سانحے میں مذموم کردار ادا کرنے والے سازشیوں کا کیا  تعلق تھا مشرقی مغربی پاکستان کے سیاسی کھلاڑیوں کے  اوچھے ہتھکنڈوں سے لے کر مکتی باہنی کی دھوکہ دہی تک، اگرتلہ سازش کا ایجنڈا پاکستان کو غیر مستحکم کرنا تھا جس کا مقصد لاہور ائیرپورٹ پر گنگا ہوائی جہاز کو ہائی جیک کرنا تھا جو بالآخر بھارتی مداخلت کا باعث بنتا تھا، اس ڈاکیومینٹری فلم  میں ان تمام مختلف پہلوؤں پر بھی تفصیل سے روشنی ڈالی گئی ہے۔

JHAUR ڈاکیومینٹری سیریز ہے جو 1971 کی پاک بھارت جنگ  کے بارے میں کچھ ان کہے  رازوں سے  پردہ اٹھاتی ہے اسے RAVA ڈاکیومینٹری نے RAVA اسٹوڈیوز کے بینر تلے تیار کیا  گیا ہے.

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *