1 32 808x454

آگے دیکھ..گروو میرا … یا آج بھی سیٹی بجے گی نمبر ون ہوگا؟؟

59 views

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل)کے ساتویں ایڈیشن کے لیے تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں جس کا باقاعدہ آغاز 27 جنوری یعنی کے آج دفاعی چیمپئن ملتان سلطانز اور سابق چیمپئن کراچی کنگز کے درمیان میچ سے ہو گا۔

صبحین عماد

تو اب شائقین کرکٹ بھی اپنی تیاری مکمل کرلیں آگے بھی دیکھنا ہے گروو بھی کراؤڈ بھرپور دیکھے گا  اور سیٹی بھی بجے گی۔

پی ایس ایل 7 کے اس ایک ماہ تک جاری رہنے والے ایونٹ میں مجموعی طور پر 34 میچز کھیلے جائیں گے۔ لیگ کو دو حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ پہلے حصے میں 27 جنوری سے سات فروری کے درمیان کراچی میں میچز ہوں گے جس کے بعد تمام ٹیمیں لاہور کا رخ کریں گی جہاں 10 فروری کو ایونٹ کے دوسرے مرحلے کا آغاز ہو گا۔

پی ایس  ایل 7، سیٹی  کل بجے گی، کھلاڑی ، تماشائی سب تیار

لیکن اس سب میں سب سے زیادہ شور جو سنائی دیتا ہے وہ ہے پی ایس ایل کا اینتھم ہر سال کی طرح اس سال بھی اپنی پوری محنت اور لگن کے ساتھ پی ایس ایل 7 کا اینتھم ریلیز کیا گیا لیکن ریلیز ہوتے ہی سوشل میڈیا پر نا ختم ہونے والی وہی پرانی بحث چھڑ گئی کہ یہ زیادہ برا ہے پہلے والا اچھا تھا ، تو آج ذرا تفصیل سے نگاہ ڈال لیتے ہیں کہ کب کون سا گانا آیا اور کس نے کون سے گانے کو کتنا پسند کیا یا اب تک کون سے ترانے  پی ایس ایل میں علی طٖفر کے سیٹی بجا کو بیٹ کرپائے، چلیے دیکھتے ہیں ۔

اب جب بات چل نکلی ہے تو بات بھی وہیں سے شروع کرتے ہیں جہاں سے یہ پسند نا پسند کی بحث نے جنم لیا۔

پی ایس ایل: سیٹی بجے گی، اسٹیج سجے گا۔

بیک وقت اداکاری، گلورکاری، پروڈکشن اور اسکرپٹ رائٹنگ کے جوہر دکھانے والےعلی ظفر کا گایا ہوا پی ایس ایل 2017 ایڈیشن کا سب سے مشہور نغمہ ’ سیٹی بجے گی، اسٹیج سجے گا، تالی بجے گی اور اب کھیل جمے گا‘ آج تک سب کی زبان پر ہےشائقین کرکٹ اس انتظار میں رہتے ہیں کہ اس بار شاید علی ظفر ہی ہوں گے لیکن پھر سیزن 4 میں علی ظفر کی جگہ فواد خان نے پی ایس ایل کے ترانے کو گانے کی زمہ داری نبھائی لیکن سوشل میڈٰیا صارفین کا دل نہ جیت سکے

پی ایس ایل: تیار ہیں

جب فواد خان بھی صارفین کے دل سے علی ظفر کی جگہ لینے میں ناکام رہے تو سوچا گیا کہ اس بار ایک دو نہیں بلکہ پاکستان کے بڑے نام اور مشہور گلوکارؤں کو یہ ذمہ داری دے دیتے ہیں اور اس بار بھی سب نے امید کی پی ایس ایل 5 کا ترانا تو چھا جائیگا۔

پی ایس ایل 5 کا آفیشل گانا ’’تیار ہیں‘‘ ریلیز کیا گیا جسے پاکستان کے 4 بڑے گلوکاروں علی عظمت، عارف لوہار، ہارون رشید اورعاصم اظہر نے مل کر گایا ۔

 تاہم گانے کی ریلیز کے بعد بہت سے لوگوں کی امیدیں مایوسی میں بدل گئیں کیونکہ گزشتہ سیزن کی طرح اس بار بھی پی ایس ایل کا نیا گانا لوگوں کی توقعات پر پورا نہیں اترا اور ایک بار پھر سیٹی بجے گی اور علی ظفر کے ہی گن گانے لگے ۔

سوشل میڈیا پر جہاں لوگ گانے پر تنقید کررہے  تھے وہیں پی سی بی انتظامیہ اور گلوکارؤں پر بھی شدید تنقید کی جارہی تھی اور پی ایس ایل کے شائقین کو ایک بار پھر علی ظفر کی یاد ستانے لگی جنہوں نے پی ایس ایل کے ابتدائی سیزن کے گانے گائے تھے جنہیں بے تحاشہ مقبولیت ملی تھی اور لوگ آج تک ان گانوں کو بھول نہیں پائے ہیں۔

ہر سال کی طرح پی ایس ایل کے آفیشل گانے کے آتے ہی میمز اور مزاحیہ پوسٹ کا سلسلہ بھی اپنے عروج پرپہنچ جاتا ہے ایک واحد علی ظفر کے گائے گانےہی ہیں جو اب تک شائقین کرکٹ سمیت سوشل میڈیا صارفین کےمقدار پر پورا اتر پائیں ہیں اور شاید یہی پریشر ہے کہ پی سی بی ہر سال پچھلے سال سے زیادہ محنت کرتی ہے کہ کوئی تو گانا ایسا ہو جو سیٹی بجے گی کو بیٹ کرسکے۔

پی ایس ایل: گروو میرا

ہر سال کی طرح پچھلے سال بھی پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کا ترانہ ریلیز ہوتے ہی سوشل میڈیا پر زیر بحث بنا ۔

 پاکستان سپر لیگ سیزن 6 کا ترانہ ’گروو میرا‘ پی ایس ایل کے تمام سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر جاری ہوا جس کے بعد یہ موضوع گفتگو بن گیا۔

پی ایس ایل کے چھٹے سیزن کا یہ ترانہ آئمہ بیگ، نصیبو لال اور ایک ہپ پاپ بینڈ ینگ سٹنرز نے گایا۔

روایتی اور ہپ پاپ میوزک کے اس امتزاج کو سن کر صارفین نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اس گانے کو پسند کیا اور ساتھ ہی کچھ صارفین نے ناپسندیدگی کا بھی اظہار کیا۔

کچھ صارفین اس گانے کو نصیبو لال تو کچھ  آئمہ بیگ اور ینگ سٹنرز کی وجہ سے پسند کر رہے ہیں۔

مجموعی طور پر سوشل میڈیا صارفین نے ملا جلا ردِ عمل ظاہر کیا لیکن ایک بڑی تعداد میں ترانہ سننے والوں نے پی ایس ایل 6 کے ترانے پر تنقید کی اور چبھتے ہوئے تبصرے بھی کیے۔ بعض نے کہا کہ اچھا ہوتا، ہم یہ نہ سنتے، جو انتہائی منفی ردِ عمل قرار دیا جاسکتا ہے۔

ایسا نہیں ہے کہ سوشل میڈیا صارفین نے صرف اور صرف گروو میرا پر تنقید کی بلکہ بہت سے ترانہ سننے والوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ نصیبو لال، آئمہ بیگ اور ینگ اسٹنرز نے گانے میں جان ڈالنے میں پوری کوشش کی لیکن صارفین کی دل میں جو جگہ علی ظفر نے ڈال دی ہے اس کی جگہ لینا خاصا مشکل ہوگیا ہے ۔

پی ایس ایل: آگے دیکھ

اس سال کا بھی انتظار ختم ہوا تو دوسری جانب میمز نے بھی سوشل میڈیا پراپنی بیٹھک جمالی پی ایس ایل سیزن 7 کا آفیشل گانا آگے دیکھ، جیت سے بھی آگے دیکھ۔‘ ریلیز ہوا تو سوشل میڈیا پر بھی دیکھنے دکھانے کا سلسلہ چل پڑا آگے دیکھ کے بول کے ساتھ لانچ ہونے والے گانے میں اردو اور پنجابی زبان کے بول سننے کو ملتے ہیں۔

اگر اس گانے کو ماضی میں لانچ کیے جانے والے گانوں کے مقابلے میں دیکھا جائے تو یہ ’قدرے سلو‘ لگ رہا ہے، اور گانا شروع ہوتے ہی آپ انتظار کرنے لگتے ہیں کہ کب وہ موقع آئے گا جب یہ گانا آپ کو اپنی جگہ سے اٹھ کر جھومنے پر مجبور کرے گا لیکن پھر مایوسی ہی ہوئی کیونکہ پورا گانا ہی اسی طرز پر بنایا گیا ہے۔

لیکن خیر سب کو ہی اس گانے میں عاطف اسلم کی موجودگی نے کافی محفوظ کیا کیونکہ اس میں تو کوئی دو رائے نہیں کہ علی ظفر کی طرح عاطف اسلم بھی لاکھوں دلوں کی دھڑکن ہیں اور جب سے صارفین کو یہ خبر ملی تھی کہ اس گانے میں عاطف اسلم اور آئمہ بیگ اپنی آواز کا جادو جگائیں ے ہر ایک کی امید کا لیول ویسے ہی بڑھ گیا تھا، لیکن یہ کیا ۔۔۔ گانا ریلیزبھی ہوگیا چل بھی گیا مگر وہ ہٹ نا ہوسکا گانے کو سننے کے بعد صارفین نے کہا کہ آگے دیکھ کے علاوہ انھیں اس میں کچھ سمجھ نہیں آیا جبکہ گانے کے بول بھی اتنے جاندار نہیں تھے جتنی امید کی جارہی تھی۔

تو اس بات کو ماننے میں اب کوئی دو رائے ہی رہی کہ اب بھی پاکستانی شائقین کی زبان پر سیٹی بجے گی کی جگہ کوئی نہیں لے سکا اس بات سے ہر گز انکار نہیں کہ ہر گانے کو بے حد محنت اور لگن سے تیار کیا گیا جو کچھ کو پسند آیا تو کچھ کونہیں بھی آیا لیکن اس کا سب کو حق ہے کہ وہ اپنی رائے کا اظہار کرنے کے لیے آزاد ہیں تو تنیقید کے لیے بھی آزاد ہیں اسی لیے کچھ نے تعریف کی تو کچھ تنقید کیے بنا نہ رہ سکے،

لیکن یہ کہنا تو بنتا ہے کہ آج دیکھے گا کراؤڈ، گروو بھی اور سیٹی بھی بجے گی گیم پھر سے جمے گا، تالی بھی بجے گی ۔۔۔ کیونکہ آج سے ہوگیا ہے پی ایس ایل 7 کے میچز کا آغاز تو پھر تیار ہیں ؟؟ سیٹی بجانے کو گیم اٹھانے کو ؟ؕ؟

content: sabheen ammad

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *