7 1 6 808x454

نور مقدم کیس : ظاہر جعفر نے سزا کے خلاف اپیل دائر کر دی

72 views

نور مقدم قتل کیس میں سزائے موت پانے والے مرکزی مجرم ظاہر جعفر نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپنی سزا کے خلاف اپیل دائر کردی۔

نور مقدم قتل کیس کے مرکزی مجرم ظاہر جعفر کو ٹرائل کورٹ کی جانب سے سزائے موت اور 25 سال قید بامشقت کی سزا و جرمانے کی سزا سنائی گئی تھی جس کے خلاف آج ظاہر جعفر نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کردی۔ مرکزی مجرم کی جانب سے سزا کو کالعدم قرار دینے کی استدعا کی گئی ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس سردار اعجاز اسحاق نے نور مقدم قتل کیس میں 9 ملزموں کی بریت کے خلاف اپیل پر سماعت کی، عدالت نے نور مقدم قتل کیس کا ریکارڈ طلب کرلیا۔

نورمقدم کے والد شوکت مقدم کی جانب سے شاہ خاور ایڈوکیٹ عدالت میں پیش ہوئے۔سماعت میں جسٹس عامر فاروق نے عدالت کو بتایا کہ اس کیس میں مجرمان کی سزا کےخلاف بھی اپیلیں آئی ہیں۔

عدالت نے نور مقدم قتل کیس سے متعلق تمام اپیلوں کو یکجا کرنے کی ہدایت کردی۔

ٹرائل کورٹ نے مجرم ظاہر جعفر کے والدین ذاکرجعفر، عصمت آدم جی، خانسا ماں جمیل سمیت 9 ملزمان کو بری کیا تھا، تھراپی ورکس کے سی ای او طاہر ظہور سمیت 6 ملزمان بھی بری ہونے والوں میں شامل تھے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ نے نور مقدم قتل کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے مجرم ظاہر جعفر کو سزائے موت سنائی تھی۔عدالت نے مجرم ظاہر جعفر کے ملازم مالی جان محمد اور چوکیدار افتخار کو 10، 10 سال قید کی سزا سنائی تھی۔

واضح رہے کہ 27 سالہ نور کو 20 جولائی 2021 کو دارالحکومت کے پوش علاقے سیکٹر ایف- 7/4 میں ایک گھر میں قتل کیا گیا تھا، اسی روز ظاہر جعفر کے خلاف واقعے کا مقدمہ درج کرتے ہوئے اسے جائے وقوع سے گرفتار کرلیا گیا تھا۔

واقعے کا مقدمہ مقتولہ کے والد کی مدعیت میں تعزیرات پاکستان کی دفعہ 302 (منصوبہ بندی کے تحت قتل) کے تحت درج کیا گیا تھا۔

ظاہر  جعفر  کو  سزائے  موت  سنائے  جانے  کے  فیصلے  کا  تمام  مقتدر  حلقوں  کی  جانب  سے  خیر  مقدم  کیا تھا  اور  اسے  انصاف  کی  جیت  قرار  دیا  گیا  تھا۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *