Pakistan Independence 808x454

آزادی کے پچھتر سال اس بار جشن کے لیے باجا نہیں پودا خریدیں

82 views

ماہ اگست میں جہاں آزادی کے ترانے کانوں میں رس گھولتے تھے وہیں اب باجے کی کان پھاڑتی آوازوں نے ہر ایک کا جینا محال کررکھا ہے۔

آزادی کے اسٹالز پر رکھے چاند ستارے ، قائداعظم محمد علی جناح ، علامہ اقبال ، مزار قائد ، مینار پاکستان اور قومی ہیروز پر بنے منفرد بیجز توجہ کا مرکز بنے ہوتے تھے  وہیں ہوا میں بلند و بالا لہراتا پاکستانی پرچم کی تو بات ہی الگ ہوتی تھی جس کو لہراتا دیکھ کر ہر پاکستانی کا جذبہ حب الوطنی گرما جاتا تھا۔

August 14 preparations: The sea of green at Pakistan Chowk - DAWN.COM

گھر ، دفاتر ، بلند و بالا عمارتیں  ، گاڑی ، موٹرسائیکل سمیت دکانوں کو سبزہلالی پرچم سے سجانا ، گلی محلوں میں بچوں کا رنگ برنگی جھنڈیاں لیکر شوروغول ، لاؤڈ اسپیکر میں قومی گیت پاکستانیوں کی روایت تھی مگر چند برسوں سے اس خاص دن کی خوشی کے اظہار کیلئے پٹاخوں کے ساتھ لال پیلے رنگ کے باجے بجانے کا بھی ایک الگ ٹرینڈ نکل پڑا ہے۔

جہاں خاص طور پر بچے جھنڈیاں خریدنے کے ساتھ یہ کانوں میں چبھتی آواز والے باجے خریدنا ضروری سمجھتے ہیں ۔ آزادی کے مہینے میں آپ کسی بھی گلی یا محلے میں چلے جائیں بھونڈی اور کانوں میں زہر گھولتے باجے کی آواز آپ کو ضرور سننے کو ملیں گے۔

جبکہ آپ کو کچھ منچلے نوجوان بھی سڑکوں میں اپنی موٹر سائیکل پر سوار پاں پاں کرتے نظر آئیں گے جو کہ محض شرارت کے طور پر خرید لاتے ہیں اور گھروالوں سمیت پورے محلے کا سکون برباد کردیتے ہیں۔

Image

مگر کیا آپ کو معلوم ہے یہ ایک باجا مارکیٹ میں کتنے روپے میں دستیاب ہے۔۔؟؟؟ سب سے چھوٹا والا 70 روپے میں دستیاب ہے جبکہ سائز جتنا بڑا ہوتا جائے گا قیمت بھی بڑھتی جائے گی جو کہ ہزاروں روپے میں پہنچ رہی ہے۔

اب اگر میں یہاں کہوں کہ باجا بجانے سے آپ کی وطن سے محبت واضح ہوتی ہے تو چھوٹا باجا لینے سے جذبہ حب الوطنی میں کوئی کمی بیشی تو نہیں آئے گی؟

تاہم کچھ باشعور افراد نے اس فرسودہ روایت کو ختم کرنیکی مہم کا آغاز کردیا ہے ، پاں پاں کے بجائے چھاں کرنے کے پیغام کو عام کیا جارہا ہے۔

جس کا مقصد سبز ہلالی پرچم کی طرح پاکستان کو بھی سربز و شاداب بنانا ہے، باجا نہ بجاؤ بلکہ اپنے ملک میں درخت پودے لگاؤ۔۔۔۔

معاشی اعتبار سے دیکھیں تو اس وقت ایک چھوٹا پودا 50 روپے سے لے کر 100 روپے میں دستیاب ہے جبکہ سوہنی دھرتی میں برسات کا بھی موسم ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ باغبانی کیلئے اگست اور ستمبر کا مہینہ بہترین ہے۔

اس دوران برسات کے باعث مٹی نرم اور ذرخیز رہتی ہے اور قدرتی طور پر ملنے والا پانی پودوں کے جڑوں پر پہنچ کر اسے پھلنے پھولنے میں مدد کرتا ہے جو کہ ناصرف فضاء کو صاف اور صحت بخش ہوا مہیا کرتا ہے بلکہ ایک ایکو فرینڈلی ماحول بھی دیتا ہے۔

Plant for Pakistan' drive launched - Newspaper - DAWN.COM

اں پاں باجا محض ایک تفریح کا سامان ہے مگر اس سے ہونے والا شور انسانی صحت کیلئے انتہائی خطرناک ہے، بلڈپریشر اور دل کے عارضہ والوں  کی جان کو خطرہ ہوسکتا ہے جبکہ کان کے قریب بجانے سے قوت سماعت کو بھی نقصان پہنچ سکتا ہے

Islamabadian on Twitter: "14th August Preparation. 🇵🇰 #Islamabad #IndependenceDay 📸 Idrees… "

ماحول ، تازگی کا احساس ، دل و دماغ کو سکون اور راحت بخشتا ہے۔

تو فیصلہ آپ کو کرنا ہے کہ ایک زہریلا آلہ یا قدرت کا عطیہ کردہ تحفہ۔۔۔۔۔۔

اس سال آزادی میں آپ اپنے بچوں کو پاں پاں خریدوائیں گے یا چھاں کے فوائد کو عام کریں گے۔

ایک ذمہ دار شہری ہونے کے ناطے آپ کہاں کھڑے ہیں؟؟؟ سوچئے گا ضرور۔۔۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *