kingisback 808x454

کنگ از بیک” تم بولو گے تو کوئی نہیں سنے گا اگر تمہارا بلا بولے گا تو سب سنیں گے”

44 views

بابر اعظم کنگ از بیک گزشتہ شب پاکستان کی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم اور محمد رضوان کی بلےبازی دیکھ کر مجھے سابق بھارتی کپتان اظہر الدین کے یہ الفاظ یاد آ گئے کہ”تم بولو گے تو کوئی نہیں سنے گا اگر تمہارا بلا بولے گا تو سب سنیں گے”

محمد فیاض(ابو ظہبی )

ایشیا کپ کے فائنل میچ میں سری لنکا کی کرکٹ ٹیم کے ہاتھوں شکست کے بعد پچھلے کافی دنوں سے پاکستان کی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم اور وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان کو کافی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا تھا۔

کبھی بابر اعظم کو آہستہ کھیلنے کی وجہ سے،اور کبھی ان کی کپتانی کو لے کر بہت سے سوالات اٹھائے جا رہے تھے۔ لاہور قلندرز کے کوچ عاقب جاوید نے یہ تک کہہ دیا کہ ہم بابر اعظم کو جان بوجھ کر آؤٹ نہیں کرتے تھے۔ وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان کو بھی کافی تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔

اگرچہ بابر اعظم نے اپنی پریس کانفرنس میں یہ ضرور کہا تھا کہ ہم کسی کی بات پر دھیان نہیں دیتے مگر میرے خیال میں ایسا ہونا ناممکن سی بات ہے۔بابر اعظم اور محمد رضوان کی بطور ابتدائی بلے باز جوڑی اچھی کارکردگی کے باوجود ہمیشہ سے تنقید کا نشانہ رہی ہے۔

اس کی ایک وجہ پہلے چھ اوورز میں زیادہ اسکور نا بنانا تھی مگر اس بار ابھی تک انگلینڈ کے خلاف ہونے والے میچوں میں ابھی تک بابر اعظم اور محمد رضوان نے اپنے ناقدین کو اپنی شاندار کارکردگی سے خوب جواب دیا ہے۔

بابر اعظم جو ایشیا کپ میں کوئی خاص کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کر سکے تھے انہوں نے کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں انگلینڈ کے خلاف دوسرے ٹی 20 میچ میں محمد رضوان کے ساتھ دو سو تین رنز کی ایک ناقابل شکست ساجھے داری کے بعد اپنے ناقدین کو چپ رہنے پر مجبور کر دیا ہے۔ بابر اعظم کی بیٹنگ دیکھ کر ایسا محسوس ہوا کہ وہ اپنے ناقدین کا غصہ بلے سے نکال رہے ہیں ۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان سات ٹی 20 میچوں پر مشتمل سیریز کا دوسرا میچ گزشتہ شب کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں کھیلا گیا۔ یہ میچ بہت سے سی باتوں کی وجہ سے اہم  رہا .اس میچ میں پاکستان کی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے بہت سے ریکارڈ اپنے نام کیے۔

بابر اعظم نے اس میچ میں چھیاسٹھ گیندوں ایک سو دس رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیلی تو وہ بطور کپتان پاکستان کی جانب سے سب سے زیادہ سنچریاں بنانے والے کھلاڑی بن گئے۔ بابر اعظم نے اب تک بطور کپتان دس سنچریاں بنائی ہیں۔

جبکہ اس سے پہلے یہ ریکارڈ انضمام الحق کے نام تھا جنہوں نے بطور کپتان نو سنچریاں بنا رکھی ہیں۔ اس سنچری کے بعد بابر اعظم ٹی 20 بین الاقوامی میچوں میں دو سنچریاں بنانے والے پہلے کھلاڑی بن گئے ہیں۔ احمد شہزاد نے بین الاقوامی ٹی 20 میچوں میں ایک سنچری بنا رکھی ہے۔ دو سو تین رنز کسی بھی بین الاقوامی ٹی 20 میچ میں ہدف کا تعاقب وہ بھی بغیر کوئی وکٹ گنوائے یہ سب سے زیادہ اسکور تھا۔

پہلے میچ کی طرح اس میچ کو دیکھنے کے لیے بھی شائقین کرکٹ کی ایک بڑی تعداد نے نیشنل اسٹیڈیم کراچی کا رخ کیا اور دنیا کو ایک بار پھر یہ پھر دکھایا کہ پاکستانی عوام کھیلوں سے کتنی محبت کرتی ہے۔

اس میچ کے لیے پاکستان کی ٹیم میں ایک تبدیلی کی گئی۔تیز گیند باز نسیم شاہ کی جگہ محمد حسنین کو پاکستان کی پلینگ الیون میں شامل کیا گیا۔ ٹاس کے معاملے میں قسمت کی دیوی ایک بار پھر انگلینڈ کے کپتان معین علی پر مہربان ہوئی۔اس بار انگلینڈ کے کپتان نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا۔

اگر کراچی کے موسم کو مدنظر رکھا جائے تو انگلینڈ کا پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ میرے لیے تھوڑا حیران کن  تھا۔ انگلینڈ کے ابتدائی بلے بازوں نے انگلینڈ کو بیالیس رنز کا آغاز فراہم کیا مگر اس کے بعد شاہنواز دھانی نے یکے بعد دیگرے دو گیندوں پر انگلینڈ کے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

کپتان معین علی کی جارحانہ بلےبازی کی بدولت انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم ایک ننانوے رنز بنانے میں کامیاب ہوئی۔ دو سو رنز کے ہدف کے تعاقب میں پاکستان کے دونوں بلے بازوں نے جارحانہ انداز اپنایا اور میچ کے آخری اوور میں پاکستان کو فتح سے ہمکنار کیا۔

اس میچ کے بعد کپتان بابر اعظم اور وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان کی جوڑی پر تنقید کرنے والے بھی کہنے پر مجبور ہو گئے کہ کیا ہی بات ہے اس جوڑی کی۔ اگر دیکھا جائے تو پاکستان کی کرکٹ ٹیم بھی وہ ہی ہے اور ٹیم مینجمنٹ بھی وہ ہی ہے، اگر کچھ بدلا ہے تو کھیلنے کا اندازہ بدلا ہے۔

میرے خیال میں اگر پاکستان کو ولڈ کپ جیتنا ہے تو اسی جارحانہ انداز کو جاری رکھنا پڑے گا۔ دوسری طرف پاکستان کرکٹ ٹیم کا مڈل آرڈر ابھی بھی پاکستان کرکٹ ٹیم کی کمزوری ہے۔ بابر اعظم اور محمد رضوان ہر میچ دس وکٹوں سے نہیں جتوا سکتے اب دیکھنا یہ ہو گا مڈل آرڈر کب اپنا کام دکھاتا ہے ۔

مصنف کے بارے میں

راوا ڈیسک

راوا آن لائن نیوز پورٹل ہے جو تازہ ترین خبروں، تبصروں، تجزیوں سمیت پاکستان اور دنیا بھر میں روزانہ ہونے والے واقعات پر مشتمل ہے

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Your email address will not be published. Required fields are marked *